Saturday , May 26 2018
Home / ہندوستان / ناگالینڈ میں منصفانہ رائے دہی کو یقینی بنانے کی اپیل، تیاریوں کا جائزہ

ناگالینڈ میں منصفانہ رائے دہی کو یقینی بنانے کی اپیل، تیاریوں کا جائزہ

سیاسی تنظیموں کی اپیل پر کارروائی کا ادعا، چیف الیکشن کمشنر کا بیان، رہنمایانہ خطوط مقامی زبان میں فراہم کرنے کا مطالبہ
کوہیما۔15 فبروری (سیاست ڈاٹ کام) چیف الیکشن کمشنر او پی راوت نے آج ریاستی اور ضلعی سطح کے عہدیداروں کو ’’بے خوف اور غیر جانبدارانہ رائے دہی‘‘ کے انعقاد کو یقینی بنانے کی ہدایت دی تاکہ 27 فبروری سے اسمبلی انتخابات کو منصفانہ بنانے کو یقینی بنایا جاسکے۔ انہوں نے نشاندہی کی کہ گزشتہ سال نومبر میں ان کے دورے کے بعد بہتری پیدا ہوئی ہے۔ حالانکہ ناگا قبائیلیوں کی تنظیموں نے اپیل کی تھی کہ شورش پسندی کے مسئلہ کا انتخابات سے پہلے حل تلاش کیا جائے لیکن تمام اضلاع میں انتخابی عہدیداروں کے ساتھ تیاریوں پر نظرثانی کے بعد کمشنروں نے اطمینان ظاہر کیا کہ کافی پیشرفت ہوچکی ہے۔ اے پی راوت نے ایک پریس کانفرنس سے خطاب کیا جس میں ان کے ساتھ دیگر دو الیکشن کمشنر سنیل ارورا اور آشا واسا بھی موجود تھے جو الیکشن کمشنر سدیپ جین کی نائب ہیں۔ دو ڈائرکٹر جنرل دلیپ شرما اور دیرا اوجھا پرنسپل سکریٹری نریندر این بٹولیا بھی نظرثانی کے اجلاس میں موجود تھے۔ ناگالینڈ اسمبلی کی 60 نشستوں میں سے 59 کے لیے رائے دہی ہوگی۔ این ڈی پی پی کے سربراہ نے اعلان کیا ہے کہ انہیں بلا مقابلہ 11 شمالی ہنگامی دوم اسمبلی حلقہ سے منتخب کرلیا گیا ہے۔ راوت نے کہا کہ ان کے دورے کے موقع پر انہوں نے مختلف سیاسی پارٹیوں کے نمائندوں سے ملاقات کی تاکہ مسئلہ کو اچھی طرح سمجھ لیا جائے اور آزادانہ اور منصفانہ انتخابات کے انعقاد کو یقینی بنایا جائے۔ انہوں نے کہا کہ بیشتر سیاسی پارٹیوں نے کمیشن کے فیصلے کا خیرمقدم کیا کہ ریاستی سطح پر انتخابات منعقد کیے جائیں اور انتخابی تیاریوں پر اظہار اطمینان کیا۔ سیاسی پارٹیوں کے نمائندوں نے گزارش کی کہ الیکشن کمیشن اپنے مبصرین روانہ کریں جو زیادہ سرگرم ہوں اور شکایات پر مناسب کارروائی کرسکیں۔ سی ای سی نے کہا کہ سیاسی پارٹیوں نے درخواست کی ہے کہ رہنمایانہ خطوط کا مقامی زبان میں ترجمہ فراہم کیا جائے تاکہ سیاسی پارٹیاں انتخابی مہم چلانے والے اور رائے دہندے اس سے ا ستفادہ کرسکیں۔ نظم و ضبط کی صورتحال کے بارے میں انہوںن ے کہا کہ کافی صیانتی انتظامات کی درخواست کی گئی ہے تاکہ انتخابات کے لیے سازگار ماحول فراہم ہوسکے۔ سیاسی پارٹیوں نے درخواست کی کہ موثر کارروائی کی جائے تاکہ انتخابی تشدد کا انسداد ہوسکے۔ چیف الیکشن کمشنر نے رائے دہندوں سے اپیل کی کہ رائے دہندوں کو غیر ضروری اثر و رسوخ سے بچایا جائے کیوں کہ چند علاقوں میں مقامی کونسلس ان پر اثرانداز ہورہی ہیں۔ راوت نے کہا کہ ریاستی انتظامیہ اور پولیس کو ہدایت دی گئی ہے کہ صیانتی انتظامات اور نظم و ضبط کے ماحول کو بہتر بنایا جائے تاکہ انسدادی اقدامات ممکن ہوسکیں۔ الیکشن کمیشن نے جنگ بندی کی سختی سے پابندی کی ہدایت دی تاکہ مسلح کارکنوں کی نقل و حرکت روکی جاسکے جو آزادانہ اور منصفانہ انتخابات کے لیے ضروری ہے۔ انہوں نے کہا کہ انتخابات سے قبل سخت چوکسی کی ہدایات جاری کی جاچکی ہیں تاکہ آسام رائیفلس مینمار کی سرحد پر مسلح کارکنوں کی سرحد پار منتقلی کا انسداد کرسکے۔ فی الحال انتخابی فہرست کے تفصیلی احاطہ کی مقدار 99.99 فیصد ہے۔

TOPPOPULARRECENT