Friday , May 25 2018
Home / اضلاع کی خبریں / ناگرکرنول میں لاری الٹ جانے سے تین مزدور ہلاک‘11 زخمی

ناگرکرنول میں لاری الٹ جانے سے تین مزدور ہلاک‘11 زخمی

بریک فیل ہوجانے کے سبب حادثہ ‘ ریاستی وزیر نے عیادت کی

ناگرکرنول 19؍ نومبر(سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) ضلع ناگرکرنول کے منڈل کولّاپورکے ایلّور کے پاس ہونے والے محبوب نگر ۔ رنگاریڈی آبپاشی پراجکٹ فیسI- کے پاس آج ہوئے بھیانک سڑک حادثے میں تین مزدور ہلاک اور 11 افراد شدیدزخمی ہوگئے جنکی حالت انتہائی تشویشناک بتائی گئی۔تفصیلات کے مطابق نوا یوگا انجنیٔرنگ کمپنی کے کیمپ سے مزدوروں کو لے کر جانے والی لاری(ٹپّر) کے بریک فیل ہوجانے کے سبب لاری سڑک سے اُترکر کنال کے بازو سے ڈھل جانے کے سبب یہ حادثہ پیش آیا ۔ تمام زخمی مزدوروں کوگورنمنٹ ہاسپٹل کولّاپور منتقل کیا گیا وہاںسے ضلعی ہاسپٹل ناگرکرنول منتقل کیا گیا جہاں ڈسٹرکٹ میڈیکل آفیسر مسٹر سدھاکرلال نے ان کا علاج کیاان کی حالت تشویشناک ہونے پر حیدرآباد کے گلوبل ہاسپٹل منتقل کیا گیا ۔تمام مزدور وں کا تعلق دوسری ریاستوں سے ہے۔حادثے کی اطلاع ملتے ہی ضلع کلکٹر مسٹر ای سریدھر،ضلع ایس پی ناگرکرنول ضلعی ہاسپٹل ناگرکرنول پہونچ کر جانکار ی حاصل کی۔زخمی مزدوروں میں کئی افراد کے ہاتھ پیر ٹوٹ گئے ۔زخمیوں میں ریاست جھارکھنڈ کے منا(عمر 48 )سال،ریاست بہار کے کرمٹو سے تعلق رکھنے والے میکانک ویلفرسوشیل (25)چھتیس گڑھ کے بستر کے جیا رام(32)، کنجولی کے گینوا(25)پرمی گاؤں کے ویلفرراج راج کمار(30)،وشاکھا پٹنم کے پیدامدانا سے تعلق رکھنے والا رمنا بابو(26)،جارکھنڈ کے جوجو(30) ،چھتیس گڑھ کنجول کے بھرت(25)،بدلون کے عبدالغفور(27)، جارکھنڈ کے جاوید انوشما(18) اور وجیا نگرم کے بلیشور سے تعلق رکھنے والے کرومورتی عمر (25) سال شامل ہیں جن کی حالت انتہائی تشویشناک بتائی جارہی ہے۔جبکہ زخمیوں کو حیدرآباد منتقل کرنے کے دوران سشیل پٹیل، بھرت، سری ناتھ نائک جانبر نہ ہوسکے۔ ر یاستی وزیرمسٹر جے کرشنا راؤ حیدرآباد کے گلوبل ہاسپٹل پہونچ کر زیرعلاج مزدوروں کی عیادت کی اور ڈاکٹروں سے ان کی صحت کے بارے میں تفصیلات حاصل کی۔اس موقع پر ریاستی وزیر برائے پنچایت راج مسٹر جے کرشنا راؤ نے مہلوکین کے خاندان کو فی کس 10لاکھ روپئے معاوضہ دلانے کے ساتھ مزید دس لاکھ روپئے کا بیمہ کروانے کے لئے اقدامات کرنے کا تیقن دیا اور زخمی مزدوروں کو فی کس 2 لاکھ روپئے اداکرنے کنٹراکٹ کمپنی کو ہدایت دی جسے کمپنی کے ذمہ داروں نے قبول کرلیا۔اور ریاستی وزیر نے کمپنی کو ہدایت دی کہ زخمی مزدوروں کی صحتیابی تک ان کو مزدوری ادا کرنے اور مکمل علاج کروانے کی ہدایت دی۔

TOPPOPULARRECENT