Wednesday , May 23 2018
Home / شہر کی خبریں / نبی خانہ مولوی اکبر کی 30 سے زائد ملگیات پر ایک شخص کا قبضہ

نبی خانہ مولوی اکبر کی 30 سے زائد ملگیات پر ایک شخص کا قبضہ

کرایہ داروں اور وقف بورڈ عہدیداروں کی طلبی اور سرزنش ، بے قاعدگی ناقابل برداشت ، صدرنشین محمد سلیم
حیدرآباد۔/6 مارچ، ( سیاست نیوز) نبی خانہ مولوی اکبر کی 30 سے زائد ملگیات صرف ایک شخص کے قبضہ میں ہونے کے انکشاف کے بعد صدرنشین وقف بورڈ محمد سلیم نے آج کرایہ داروں اور وقف بورڈ کے عہدیداروں کو طلب کرتے ہوئے سرزنش کی۔انہوں نے کہا کہ اوقافی جائیدادوں کے سلسلہ میں کسی بھی بے قاعدگی کو برداشت نہیں کیا جائیگا۔ انہوں نے نبی خانہ مولوی اکبر کی تمام ملگیات کے کرایہ داروں کی تفصیلات حاصل کرنے کیلئے چیف ایکزیکیٹو آفیسر منان فاروقی کی قیادت میں عہدیداروں کی 3 ٹیموں کو روانہ کیا ہے۔ یہ ٹیمیں کل تک اپنی رپورٹ صدرنشین وقف بورڈ کو پیش کردیں گی۔ نبی خانہ مولوی اکبرکی ملگیات میں کرایہ داروں اور ان کی جانب سے ادا کئے جانے والے کرایوں کی تفصیلات بھی طلب کی گئی ہیں۔ صدر نشین وقف بورڈ نے کہا کہ تمام کرایہ نامے منسوخ کرتے ہوئے نئے کرایہ نامے مارکٹ ریٹ کے لحاظ سے تیار کئے جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ جو بھی کرایہ دار اضافی کرایہ کی ادائیگی سے انکار کرے اس کے خلاف تخلیہ کی کارروائی کی جائے گی۔ اسمبلی کی وقف کمیٹی کے اجلاس میں کل اس بات کا انکشاف ہوا تھا کہ گلاب اگروال نامی شخص کے تحت 30 ملگیات ہیں۔ وقف بورڈ کے ریکارڈ میں یہ درج ہے۔ اس کے علاوہ مذکورہ شخص نے ملگیات میں پارٹیشن کرتے ہوئے نئی ملگیات تیار کی ہیں اس طرح تقریباً100 ملگیات ایک ہی شخص کے قبضہ میں ہیں اور محض معمولی کرایہ پر برسوں سے یہ تصرف جاری ہے۔ صدرنشین وقف بورڈ نے آج گلاب اگروال کو طلب کیا اور دستاویزات طلب کئے۔ اگروال نے کہا کہ اس نے بلڈر کے ساتھ معاہدہ کیا تھا اور تعمیری کام میں تعاون پر بلڈر نے ملگیات کرایہ پر دینے کا معاہدہ کیا تھا۔ صدرنشین وقف بورڈ نے کہا کہ بلڈر کے معاہدہ کی مدت ختم ہوچکی ہے لہذا اب وقف بورڈ سے نیا معاہدہ کرنا ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ سابقہ معاہدات کی کوئی اہمیت نہیں۔ صدرنشین وقف بورڈ نے افسوس کا اظہار کیا کہ مارکٹ ریٹ کے اعتبار سے فی کس ماہانہ 20ہزار کرایہ کے بجائے محض 200/- روپئے ادا کئے جارہے ہیں۔ صدرنشین نے بلڈر سے معاہدہ کی فائیل اور دیگر تمام دستاویزات پیش کرنے کی ہدایت دی۔ انہوں نے اگروال سے کہا کہ اس قدر بڑی تعداد میں ملگیات پر تصرف نہیں چلے گا اور وقف بورڈ یہ ملگیات دوبارہ الاٹ کرے گا۔ چیف ایکزیکیٹو آفیسر کی قیادت میں عہدیداروں کی ٹیم جب نبی خانہ مولوی اکبر پٹیل مارکٹ پہنچی تو مقامی تاجروں نے وقف بورڈ کے رویہ پر ناراضگی جتائی۔ چیف ایکزیکیٹو آفیسر نے واضح کیا کہ تفصیلی رپورٹ کا جائزہ لینے کے بعد بورڈ ملگیات کے ری الاٹمنٹ کا فیصلہ کرے گا۔ بلڈر سے وقف بورڈ کا معاہدہ 20سال کا تھا اور اب 27سال گزر چکے ہیں۔ صدرنشین وقف بورڈ نے کہا کہ نبی خانہ مولوی اکبر اور مکہ مدینہ علاء الدین وقف کے کرایوں میں اضافہ کرتے ہوئے بورڈ کی آمدنی میں اضافہ کو یقینی بنایا جائے گا۔

TOPPOPULARRECENT