Friday , November 24 2017
Home / Top Stories / پارلیمنٹ میں نابالغ کی عمر میں تخفیف کا قانون منظور

پارلیمنٹ میں نابالغ کی عمر میں تخفیف کا قانون منظور

منیکا گاندھی کا اپوزیشن سے اظہار تشکر، راجیہ سبھا میں بل عجلت میں منظور: بایاں بازوں
نئی دہلی ۔ 22 ۔ ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) جو لڑکے 16 سال یا اس سے زیادہ عمر کے ہوں گے ، ان پر گھناؤنے جرائم جیسے عصمت ریزی کے الزام میں بالغوں کے مماثل مقدمہ چلایا جائے گا ۔ پارلیمنٹ میں آج یہ قانون منظور ہوگیا جبکہ نابالغ مجرم کو جو 2012 ء کے گھناؤنے اجتماعی عصمت ریزی و قتل کے مقدمہ میں مجرم قرار دیا گیا تھا ۔ عدالت سے رہا کردیا گیا کیونکہ اسے اس سے زیادہ سزا دینے کا کوئی قانون موجود نہیں تھا ۔ بائیں بازو کی پارٹیوں کے علاوہ دیگر چند سیاسی پارٹیوں جیسے این سی پی اور ڈی ایم کے نے اس اقدام پر خبردار رہنے کا انتباہ دیا۔ یہ قانون پہلے ہی لوک سبھا میں منظور ہوچکا تھا ۔

بائیں بازو کی پارٹیاں چاہتی تھیں کہ اسے سلیکٹ کمیٹی سے رجوع کیا جائے تاکہ جذباتی دباؤ کے تحت قانون میں عجلت میں ترمیم نہ کی جاسکے ۔ عمر کی حد میں کمی کا مطلب یہ ہے کہ اب تک کے نابالغوں کے بارے میں قانون کے بموجب گھناؤنے جرائم جیسے عصمت ریزی کا مقدمہ صرف بچوں کے جسٹس بورڈس چلا سکتے تھے اور انہیں تین سال سے زیادہ عرصہ کی سزا نہیں دی جاسکتی تھی۔ قانون پر مباحث کا جواب دیتے ہوئے مرکزی وزیر برائے بہبود خواتین و اطفال منیکا گاندھی نے کہا کہ یہ قانون سازی منفرد ہے اور ایسے قانون کی ضرورت تھی تاکہ گھناؤنے جرائم میں رکاؤٹ پیدا ہوسکے۔ ارکان کے اندیشوں کا ازالہ کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ یہ بچوں کے خلاف نہیں بلکہ انہیں تحفظ فراہم کرتا، ان کی نشو و نما کرتا اور انہیں محفوظ رکھتا ہے۔ نربھئے کے والدین نے بھی اس قانون کی منظوری پر اظہار تشکر کیا۔ کئی شہری حقوق کارکنوں اور این جی اوز نے احساس ظاہر کیا کہ یہ قانون جذباتی دباؤ کے تحت منظور کیا گیا ہے جبکہ نربھئے مقدمہ کے مجرم کو رہا کیا جاچکا ہے۔

دبئی میں پھنسے ہوئے ہندوستانیوں کی مدد کا تیقن:سشما سوراج
نئی دہلی ۔ 22 ۔ ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) یو پی کا متوطن ہندوستانیوں کا ایک گروپ دبئی میں ایک بس کے اندر سکونت اختیار کئے ہوئے ہیں جبکہ انہیں ملازمت کا دھوکہ دیکر ایک ایجنٹ نے دبئی منتقل کیا تھا۔ اس خبر پر وزیر خارجہ سشما سوراج نے تیقن دیا کہ اس معاملہ کی جلد ہی یکسوئی ہوجائے گی اور یہ لوگ وطن واپس آجائیں گے۔

نربھئے کے والدین کا قانون کی منظوری کا خیرمقدم

نئی دہلی۔/22ڈسمبر، ( سیاست ڈاٹ کام ) ڈسمبر 2012 کے اجتماعی عصمت ریزی کا شکار لڑکی کے والدین نے آج راجیہ سبھا میں نابالغ عصمت ریزی کے مجرمین کے بارے میں قانون کی منظوری کا خیرمقدم کیا۔ جب وزیر بہبود خواتین و اطفال مینکا گاندھی نے جیونل جسٹس بل پیش کیا متاثرہ لڑکی جسے نربھئے کا نام دیا گیا تھا کے والدین نے وزیٹرس گیلری سے ایوان کی کارروائی کا مشاہدہ کیا۔ ان کے ہمراہ مہیلا کانگریس لیڈر شوبھا اورا اور سابق صدر نشین دہلی ویمنس کمیشن برکھا سنگھ موجود تھے۔ واضح رہے کہ نربھئے کے والدین نے اجتماعی عصمت ریزی کیس میں سزا یافتہ نابالغ لڑکے کی رہائی کے خلاف احتجاج کیا تھا۔ وقفہ وقفہ سے التواء کے بعد راجیہ سبھا کی کارروائی 2بجے شروع ہونے پر جیونل جسٹس (بچوں کی دیکھ بھال اور حفاظت ) کا بل پیش کیا گیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT