Wednesday , August 15 2018
Home / اضلاع کی خبریں / نرساپور اقلیتی اقامتی اسکول میںمسائل کا انبار

نرساپور اقلیتی اقامتی اسکول میںمسائل کا انبار

ناتجربہ کار پرنسپل کے سبب انتظامی امور ٹھپ، کئی طلبہ کی اپنے مکانات کو واپسی
نرساپور /24 نومبر ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز ) انتظامی امور میں مبینہ لاپرواہی ایک اور مثال سے نرساپور اقلیتی اقامتی اسکول ایک بار پھر سرخیوں میں چھا گیا ۔ اساتذہ بالخصوص فزیکل ٹیچر کی مجرمانہ غفلت پرنسپل کی عدم توجہی سے ایک طالب علم زخمی ہوگیا ۔ جبکہ درجنوں طلبہ اپنے گھروں کو چلے گئے اور کئی طلبہ خارش جیسی بیماری کے سبب مشکلات کا شکار ہے طلبہ کی اسکول سے اپنے مکانات روانگی اور موجودہ طلبہ کی حالت کو دیکھ کر اولیائے طلباء فکر مند ہیں ۔ اس کے علاوہ موسم سرمایہ کے آغاز کے باوجود اقامتی اسکول میں گرم پانی کا کوئی انتظام نہیں اور نہ ہی ناکارہ گریزر کی مرمت عمل میں لائی گئی ۔ سرمایہ کے موسم میں طلبہ شدید پریشانیوں کا شکار ہے ۔ اسکول کی اس حالت کی ایک اہم وجہ غیر تجربہ کار انتظامیہ تصور کیا جارہا ہے ۔ اقلیتی اقامتی اسکولس کے انتظامی اور کو بہتر بنانے کیلئے ریٹائرڈ تجربہ کار ہیڈ ماسٹر و پرنسپل کی خدمات حاصل کرتے ہوئے پرنسپل مقرر کیا جانے کا عمل شروع کیا جائے تو بہتر نتائج برآمد ہوں گے اور سرکاری منصوبہ کامیاب ہوگا ۔ ریاستی حکومت کی سنجیدگی کے باوجود انتظامی امور میں لاپرواہی سے سرکاری ساک متاثر ہونے کے در پر ہے ۔ بتایا جاتا ہے کہ تجربہ کار اور ماہر کو پرنسپل کی ذمہ داری دی جاتی تو بہتر ہوتا لیکن نرساپور اقلیتی اقامتی اسکول کی موجودہ پرنسپل میں تجربہ اور قابلیت کی کمی پائی جاتی ہے اور انہیں اسکول کے انتظامات پر اپنی گرفت کو مضبوط کرنے میں ناکامی حاصل ہو رہی ہے ۔ جس کے سبب خود پرنسپل اور اسکول کے انتظامات میں مشکلات پیدا ہو رہی ہے ۔ ضلع کے اعلی عہدیداروں کو چاہئے کہ وہ نرساپور اقلیتی اقامتی اسکول کی حالت کو بہتر بنانے کے اقدامات کریں اور سرکاری پالیسی کو کامیاب بناتے ہوئے اقلیتوں کی تعلیمی ترقی کے چیف منسٹر کے خواب کو شرمندہ تعبیر کریں ۔

TOPPOPULARRECENT