Monday , September 24 2018
Home / شہر کی خبریں / نرسمہا راؤ کو بھارت رتن کا مطالبہ

نرسمہا راؤ کو بھارت رتن کا مطالبہ

حیدرآباد ۔ 24 ڈسمبر ۔ ( سیاست نیوز) مرکز میں این ڈی اے حکومت کی جانب سے سابق وزیراعظم اٹل بہاری واجپائی اور جن سنگھ کے قائد مدن موہن مالویہ کو بھارت رتن کے اعلان کے فوری بعد چیف منسٹر تلنگانہ چندرشیکھر راؤ نے سابق وزیراعظم پی وی نرسمہا راؤ کو بھی بھارت رتن کا مطالبہ کیا ہے۔ پی وی نرسمہا راؤ کا تعلق چونکہ تلنگانہ سے ہے، چندرشیکھر راؤ گز

حیدرآباد ۔ 24 ڈسمبر ۔ ( سیاست نیوز) مرکز میں این ڈی اے حکومت کی جانب سے سابق وزیراعظم اٹل بہاری واجپائی اور جن سنگھ کے قائد مدن موہن مالویہ کو بھارت رتن کے اعلان کے فوری بعد چیف منسٹر تلنگانہ چندرشیکھر راؤ نے سابق وزیراعظم پی وی نرسمہا راؤ کو بھی بھارت رتن کا مطالبہ کیا ہے۔ پی وی نرسمہا راؤ کا تعلق چونکہ تلنگانہ سے ہے، چندرشیکھر راؤ گزشتہ ایک عرصہ سے اُنھیں بھارت رتن اعزاز دیئے جانے کا مرکز سے مطالبہ کررہے ہیں ۔ اس سلسلے میں تلنگانہ حکومت نے باقاعدہ قرارداد منظور کرتے ہوئے مرکزی حکومت کو روانہ کی تھی ۔ بی جے پی زیرقیادت این ڈی اے حکومت کی جانب سے بھارت رتن اعزاز کیلئے اٹل بہاری واجپائی اور مدن موہن مالویہ کے انتخاب پر سیکولر اور اقلیتی طبقہ کو کوئی حیرت نہیں ہوئی تاہم اقلیتوں سے ہمدردی کا دعویٰ کرنے والے چندرشیکھر راؤ کا پی وی نرسمہا راؤ کے حق میں مہم چلانا باعث حیرت ہے ۔ کے سی آر اور حکومت میں شامل افراد اچھی طرح جانتے ہیں کہ بابری مسجد کے مسئلے پر پی وی نرسمہا راؤ کے رول کے سلسلے میں اقلیتوں اور ملک کے سیکولر طبقہ میں سخت ناراضگی پائی جاتی ہے ۔ یہی وجہ ہے کہ کانگریس پارٹی نے بھی نرسمہا راؤ سے کنارہ کشی کرلی ، لیکن تلنگانہ راشٹرا سمیتی نرسمہا راؤ کی وراثت کو آگے بڑھانے کوشاں دکھائی دے رہی ہے ۔ مرکز کی جانب سے دو شخصیتوں کو بھارت رتن اعزاز کے اعلان کا کے سی آر نے خیرمقدم کیا۔ انھوں نے کہا کہ واجپائی اور مالویہ نے عالمی سطح پر ہندوستان کی عظمت کو منوایا ہے۔
کے سی آر کے مطابق واجپائی اور مالویہ آنے والی نسلوں کیلئے مشعل راہ ہے ۔ انھوں نے اپنے پیام میں کہا کہ تلنگانہ عوام کی جانب سے اور وہ شخصی طورپر مرکزی حکومت کے فیصلے کا خیرمقدم کرتے ہیں ۔ تاہم سابق وزیراعظم پی وی نرسمہا راؤ کو بھی بھارت رتن اعزاز دیا جانا چاہئے ۔ انھوں نے یاد دلایا کہ ٹی آر ایس حکومت نے اس سلسلے میں مرکز سے نمائندگی کی تھی ۔ پی وی نرسمہا راؤ کو بھارت رتن کا اعزاز نہ دیئے جانے پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کے سی آر نے مرکز سے اپیل کی کہ وہ کم از کم اس مرحلے پر بھارت رتن اعزاز کیلئے نرسمہا راؤ کے نام پر غور کرے۔ دلچسپ بات یہ ہے کہ ٹی آر ایس حکومت نرسمہا راؤ کے حق میں مرکز سے نمائندگی کررہی ہے لیکن اُس کی تائید کرنے والی مسلم جماعتیں اور قیادتیں خاموش تماشائی بنی ہوئی ہیں۔ نرسمہا راؤ کے مسئلے پر خود ٹی آر ایس کے اقلیتی قائدین حکومت کی تجویز سے اتفاق نہیں رکھتے تاہم وہ کھل کر اظہار خیال سے مجبور ہیں۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT