Tuesday , December 11 2018

نریندر مودی اقتدار میں ملک ’’عجیب تھکن‘‘ سے دوچار

بی جے پی ملازمتوں کی فراہمی اور کسانوں کے مسائل حل کرنے میں ناکام ، صرف نفرت پھیلانے میں مصروف : راہول گاندھی

نئی دہلی ۔ /17 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) کانگریس کے صدر راہول گاندھی نے کہا ہے کہ نریندر مودی کے اقتدار میں ملک ایک عجیب تھکن سے دوچار ہوگیا ہے اور دعویٰ کیا کہ صرف ان کی پارٹی (کانگریس) ہی ملک کو ترقی کے راستہ پر گامزن کرسکتی ہے ۔ کانگریس کے 84 ویں پلینری سیشن سے مختصر خطاب میں راہول گاندھی نے این ڈی اے حکومت کو سخت تنقید کا نشانہ بنایا اور اس پر زرعی بحران کی یکسوئی اور روزگار کی فراہمی میں ناکام ہوتے ہوئے ملک میں نفرت و برہمی پھیلنے کا الزام عائد کیا ۔ انہوں نے کہا کہ صرف کانگریس پارٹی ہی ملک میں اتحاد پیدا کرسکتی ہے اور ترقی کا راستہ دکھاسکتی ہے ۔ راہول گاندھی نے کہا کہ حکمراں جماعت اور ان کی پارٹی میں فرق و اختلاف ہی ہے کہ وہ (حکمراں جماعت) نفرت و برہمی پھیلارہی ہے ۔جبکہ ہم محبت و بھائی چارگی کو عام کررہے ہیں ۔ راہول گاندھی نے کہا کہ ان کی قیادت میں کانگریس پارٹی اپنے تمام سینئر قائدین اور نوجوان کو ساتھ لے کر آگے بڑھے گی کیونکہ اس پارٹی کی یہ روایت رہی ہے کہ اپنے ماضی اور وراثت کو فراموش کئے بغیر تبدیلی لائی جائے ۔ انہوں نے کہا کہ ’’نوجوان اگر کانگریس کو آگے لیجانا چاہتے ہیں تو سینئر و تجربہ کار قائدین کے بغیر اس پارٹی کو آگے نہیں لیجایا جاسکتا ۔ چنانچہ میری ذمہ داری ہے کہ ایک نئی جہت دینے کیلئے بزرگ قائدین اور نوجوانوں کو متحد کیا جائے ‘‘ ۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس کے نمائندوں نے اپنی پارٹی کے نظریات کو زندہ رکھنے کیلئے سخت جدوجہد کی ہے ۔ اس پارٹی کے سینئر قائدین ہی نوجوانوں کی رہنمائی کریں گے ۔ اور پارٹی کو آگے لے جائیں گے ۔ راہول گاندھی نے موجودہ نریندر مودی حکومت پر طنز و تنقید کرتے ہوئے کہا کہ ملک کے کروڑوں نوجوان وزیراعظم نریندر مودی پر نظریں جمائے بیٹھے ہیں لیکن انہیں (نوجوانوں کو) کچھ حاصل نہیں ہورہا ہے اور یہ معلوم نہیں ہورہا ہے کہ روزگار کہاں سے آئیں گے ۔ کسانوں کو بھی ہنوز یہ معلوم نہیں ہوسکا ہے کہ انہیں اپنی زرعی پیداوار کی منصفانہ اور واجبی قیمتیں کب ملیں گی ۔ چنانچہ ملک بہرحال ایک عجیب تھکاوٹ کا شکار ہوگیا ہے اور اس حالت سے باہر نکلنے کے راستے تلاش کررہا ہے ۔ راہول نے کہا کہ ’’میں اپنے دل کی گہرائیوں سے کہہ سکتا ہوں کہ صرف کانگریس ہی ہے (ملک کو) راستہ دکھاسکتی ہے ‘‘ ۔ راہول گاندھی نے اعادہ کیا کہ یہ ملک اس کے سارے عوام کا ہے ۔ یہ (ملک) تمام مذاہب ، ذاتوں اور ہر فرد کا ہے اور کانگریس جو کچھ بھی کرے گی وہ سارے ملک کے لئے کرے گی اور ہر فرد واحد کیلئے کرے گی ۔ اور کسی کو بھی تنہا نہیں چھوڑا جائے گا ۔ انہوں نے کہا کہ ان کی پارٹی ہی ملک اور عوام کے اتحاد کے لئے کام کرتی رہی ہے اور کانگریس کا انتخابی نشان ’’ہاتھ ‘‘ ہی ایسا کرنے والا واحد نشان ہے ۔ کانگریس کے چند سینئر قائدین نے جن سے ملکارجن کھرگے اور اجئے ماکن بھی شامل ہیں اپنی پارٹی کے تمام قائدین پر زور دیا کہ بی جے پی کے خلاف اپنی جدوجہد کے لئے تمام اختلافات فراموش کرتے ہوئے متحد ہوجائیں کیونکہ کوئی دوسری جماعت نہیں بلکہ صرف کانگریس ہی بی جے پی کو شکست دے سکتی ہے ۔ کانگریس کے سینئر لیڈر ششی تھرور نے کہا کہ بی جے پی کی ہندوتوا دراصل ہندوازم نہیں ہے چنانچہ ہندوازم پر بی جے پی کو قبضہ کرنے کی اجازت نہ دی جائے ۔ کانگریس کے دو روزہ پلینری سیشن میں یو پی اے کی صدرنشین سونیا گاندھی ، سابق وزیراعظم منموہن سنگھ اور دیگر سینئر قائدین بھی شرکت کررہے ہیں ۔

TOPPOPULARRECENT