Saturday , February 24 2018
Home / Top Stories / نریندر مودی ایم بی بی ایس ڈگری نہ رکھنے کے باوجود ’’بہترین ڈاکٹر‘‘

نریندر مودی ایم بی بی ایس ڈگری نہ رکھنے کے باوجود ’’بہترین ڈاکٹر‘‘

صاف صفائی، کرپشن، غربت، فرقہ رپرستی، ذات پات اور دہشت گردی جیسی بڑی بیماریوں کے علاج میں وزیراعظم مصروف
پاناجی 19 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) مرکزی وزیر ارجن رام میگھوال نے آج وزیراعظم نریندر مودی کو ملک کا سب سے بہترین ڈاکٹر قرار دیا۔ اُنھوں نے کہاکہ اگرچہ مودی جی ایم بی بی ایس کی ڈگری حاصل نہ کئے ہوں لیکن وہ یقینی طور پر ایک ایسے بہترین ڈاکٹر ہیں جو ملک میں طاعون کی طرح پھیلی ہوئی کئی ایک بیماریوں کا علاج کررہے ہیں۔ وزیر مملکت برائے آبی ریسورس نے یہ ریمارک گوا میں جاری ایم آر اے آئی کے انٹرنیشنل انڈین میٹلاس ری سائیکلنگ کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اُنھوں نے کہاکہ ایسی کئی ممالک ہیں جنھوں نے 1947 ء میں ہندوستان کی طرح برٹش حکومت سے آزادی حاصل کی تھی۔ تاہم ہندوستان اُس تیز رفتاری کے ساتھ شرح ترقی حاصل کرنے میں ناکام رہی جتنی رفتار سے وہ ترقی یافتہ ہونے کا حق رکھتا ہے۔ اور اس کی بنیادی وجہ ملک میں پائی جانے والی چھ بڑی بیماریاں ہیں۔ سلسلہ خطاب جاری رکھتے ہوئے وزیر موصوف نے مزید کہاکہ اِس میں کوئی دو رائے نہیں کہ ہندوستان میں بھی ترقی ہوئی ہے مگر اس ترقی کی رفتار ویسی نہیں ہے جیسی ہونی چاہئے تھی۔ اُنھوں نے 6 بڑی بیماریوں کی نشاندہی کرتے ہوئے کہاکہ کرپشن، غربت، فرقہ پرستی، صاف صفائی، ذات پات اور دہشت گردی جیسی 6 بڑی بیماریاں ملک کو اپنی گرفت میں لی ہوئی ہیں۔ جس کی وزیراعظم نریندر مودی نے نہ صرف شناخت کی ہے بلکہ اُن بیماریوں کا علاج بھی کررہے ہیں۔ اُن کے مطابق یہی وہ 6 اہم وجوہات ہیں جس کی وجہ سے ہمارے ملک کی ترقی کی رفتار سست روی کا شکار ہوچکی ہے۔ اُنھوں نے کہاکہ مودی جی نے ہندوستان کی تیز رفتار ترقی کو یقینی بنانے کے لئے مذکورہ بیماریوں کے خلاف جنگ چھیڑ رکھی ہے جس نے پورے ملک کو مرض طاعون کی طرح اپنی گرفت میں لے رکھا ہے۔ اُنھوں نے پھر اعاداہ کیاکہ وزیراعظم کے پاس اگرچہ ایم بی بی ایس کی ڈگری نہیں ہے تاہم وہ اس معاملہ میں ایک بہترین ڈاکٹر ثابت ہوئے۔ اُنھوں نے اعلیٰ سطح پر صاف صفائی کے کام انجام دیا۔ یہ ذات خود اس بات کا اظہار ہے کہ وزیراعظم کو اس شعبہ سے کتنی دلچسپی ہے۔ انھوں نے یہ بات میٹلاس ری سائیکلنگ اسوسی ایشن آف انڈیا (ایم آر اے آئی) کے ارکان سے خطب کرتے ہوئے کہی۔ اُنھوں نے زور دیتے ہوئے کہاکہ ’’میرا دیش بدل رہا ہے آگے بڑھ رہا ہے‘‘ یہ صرف ایک نعرہ نہیں بلکہ یہ ایک ایسی حقیقت ہے جس نے ملک کی تصویر بدل کر رکھ دی ہے۔ صاف صفائی کے حوالہ سے بات کرتے ہوئے اُنھوں نے کہاکہ تین چار سال پہلے جب سیاح ہندوستان آتے تھے ااُنھیں جابجا کچرے کا انبار نظر آتا ہے۔ مگر آج صورتحال تبدیل ہوگئی ہے اور مذکورہ نعرے نے حقیقی شکل اختیار کرلیا ہے۔ جس سے لوگوں کا ذہن تبدیل ہوگیا اور لوگ صاف صفائی پر زیادہ توجہ دینے لگے۔ اس موقع پر ایم آر اے آئی پریسڈنٹ سنجے مہتا نے خطاب کرتے ہوئے درخواست کی کہ میٹلاس ری سائیکلنگ انڈسٹری کے لئے ایک مناسب پالیسی بنائی جائے اور اسکراپ کی برآمدگی پر کسٹم ڈیوٹی کو ختم کردیا جائے تاکہ یہ شعبہ دیگر شعبوں کی طرح تیزی سے فروغ پاسکے۔

TOPPOPULARRECENT