Tuesday , December 18 2018

نریندر مودی حکومت، بی جے پی اور آر ایس ایس کی مشترکہ صنعت

وشاکھاپٹنم 14 اپریل (پی ٹی آئی) سی پی آئی (ایم) نے اپنی حالیہ بدترین انتخابی ناکامیوں کے بعد اب اپنے زیراثر مقامات بالخصوص طاقتور گڑھ سمجھی جانے والی ریاست مغربی بنگال میں اپنی بنیادوں کو دوبارہ مستحکم بنانے پر توجہ مرکوز کررہی ہے جہاں پارلیمانی اور اسمبلی انتخابات میں اس کو بُری طرح شکست ہوگئی تھی۔ سی پی آئی (ایم) کے جنرل سکریٹری

وشاکھاپٹنم 14 اپریل (پی ٹی آئی) سی پی آئی (ایم) نے اپنی حالیہ بدترین انتخابی ناکامیوں کے بعد اب اپنے زیراثر مقامات بالخصوص طاقتور گڑھ سمجھی جانے والی ریاست مغربی بنگال میں اپنی بنیادوں کو دوبارہ مستحکم بنانے پر توجہ مرکوز کررہی ہے جہاں پارلیمانی اور اسمبلی انتخابات میں اس کو بُری طرح شکست ہوگئی تھی۔ سی پی آئی (ایم) کے جنرل سکریٹری پرکاش کرت اپنی پارٹی کی 21 ویں چھ روزہ کانگریس کے خدوخال کا تعین کرتے ہوئے کہاکہ بالخصوص اس پارٹی اور بالعموم بائیں بازو محاذ کو مستحکم بنانا دراصل نریندر مودی حکومت کو چیلنج کرنے کے لئے ناگزیر ہے۔ نریندر مودی حکومت کو اُنھوں نے آر ایس ایس اور بی جے پی کی ایک ایسی مشترکہ کمپنی قرار دیا جس میں مواخر الذکر دونوں تنظیموں کے سب سے زیادہ ’’حصص‘‘ ہیں۔ مسٹر کرت نے اپنی پارٹی کی تین سال میں ایک مرتبہ منعقد ہونے والی اس کانفرنس سے افتتاحی خطاب کرتے ہوئے کہاکہ ’’اس مرحلہ پر یہ ضروری ہوگیا ہے کہ بائیں بازو اور بالخصوص سی پی آئی (ایم) کے آزادانہ استحکام کو مزید وسعت دی جائے۔ اس مقصد کے لئے ہمیں چاہئے کہ بالخصوص مغربی بنگال میں حالیہ انتخابی ناکامیوں سے ہونے والے صدمے سے باہر نکل آئیں‘‘۔ مسٹر کرت نے کہاکہ ’’سب سے پہلے ہمیں مسئلہ یہ ہے کہ بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) برسر اقتدار ہے جو راشٹریہ سوائم سنگھ (آر ایس ایس) کی سیاسی وسعت کے سوا کچھ نہیں ہے۔ اس طرح مودی حکومت دراصل آر ایس ایس اور بی جے پی کی مشترکہ صنعت ہے جس میں یہ دونوں تنظیمیں ہی بڑی حصہ دار ہیں‘‘۔ مودی حکومت کو سخت تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے پرکاش کرت نے کہاکہ اس کے برسر اقتدار آنے کے بعد سارا ملک سماجی و ثقافتی اقتصادی و سیاسی مسائل پر دائیں بازو کی اشتعال انگیزی کا سامنا کررہا ہے۔ اُنھوں نے موجودہ حکومت سے عوام بیزار ہوچکے ہیں اور اپنے حقوق کی حفاظت کے لئے باہر نکل رہے ہیں چنانچہ سی پی آئی (ایم) ان عوام کی تائید کرے گی۔ سینئر قائدین سیتارام یچوری، تریپورہ کے چیف منسٹر مانک سرکار، کیرالا کے سابق چیف منسٹر وی ایس اچھوتانندن اور دوسروں کے علاوہ سی پی آئی کے سکریٹری ایس سدھاکر ریڈی نے بھی شرکت کی۔ مغربی بنگال کے ایک سینئر لیڈر محمد امین نے کانفرنس کے آغاز سے قبل سی پی آئی (ایم) کا پارٹی پرچم لہرایا۔

TOPPOPULARRECENT