Saturday , December 16 2017
Home / سیاسیات / نریندر مودی معافی مانگو، پھیکو ماما معافی مانگو

نریندر مودی معافی مانگو، پھیکو ماما معافی مانگو

سونیا گاندھی کے خلاف وزیراعظم کے الزامات پر پارلیمنٹ میں کانگریس ارکان کی نعرہ بازی
نئی دہلی ۔ 9 ۔ مئی (سیاست ڈاٹ کام) کانگریس نے آج پارلیمنٹ میں ہنگامہ برپا کردیا ہے اور کیرالا میں ایک انتخابی ریالی کے دوران وزیراعظم نریندر مودی کے اس الزام پر کہ اٹلی کی ایک عدالت نے اگستا ویسٹ لینڈ ہیلی کاپٹر رشوت ستانی کیس میں سونیا گاندھی کا نام لیا ہے ۔ ایوان کی کارروائی کو درہم برہم کردیا ۔ کانگریس ارکان کی مسلسل ہنگامہ آرائی اور نعرہ بازی سے راجیہ سبھا کی کارروائی ابتدائی 2 گھنٹوں میں 4 مرتبہ ملتوی کردی گئی جس کے نتیجہ میں وقفہ صفر اور وقفہ سوالات منعقد نہیں کیا جاسکا۔ راجیہ سبھا میں کانگریسی ارکان نے یہ نعرہ بلند کیا کہ نریندر مودی معافی مانگو، پھیکو ماما معافی مانگو، ایوان میں شور و غل کے مناظر کے باعث وقفہ سوالات کے دوران صرف ایک سوال کے سواء کوئی دوسری کارروائی انجام نہیں دی جاسکے۔ لوک سبھا میں بھی ایوان کی کارروائی شروع ہوتے ہی کانگریس ارکان نے یہ تنازعہ چھیڑتے ہوئے ماحول گرمادیا اور دریافت کیا کہ وزیراعظم کس طرح یہ الزام عائد کرسکتے ہیں جبکہ وزیر دفاع نے گزشتہ ہفتہ دونوں ایوانوں میں اس تنازعہ پر مباحث کا جواب دیتے ہوئے کوئی تذکرہ بھی نہیں کیا ۔ اپوزیشن پارٹی نے وضاحت طلب کی کہ نریندر مودی نے کس عدالت کا حوالہ دیا ہے اور یہ نعرہ بلند کیا کہ پردھان منتری ہاؤز (ایوان) میں آؤ اور اس کا جواب دو ۔ راجیہ سبھا میں بھی کانگریس نے وزیراعظم سے معذرت خواہی کا مطالبہ کیا ۔ شورو غل اور ہنگامہ آرائی کی وجہ سے نائب صدرنشین پی جے کورین نے  وقفہ صفر کے دوران پہلی مرتبہ 10 منٹ کیلئے اور دوبارہ 12 بجے تک کارروائی ملتوی کردی۔ دوبارہ 12 بجے کارروائی شروع ہوتے ہی صدرنشین حامد انصاری نے وقفہ صفر بحال کرنے کی خواہش کی  لیکن کانگریس ارکان نے کوئی مثبت ردعمل ظاہر نہیں کیا اور وزیراعظم کے خلاف بدستور نعرے بلند کرتے ہوئے ایوان میں افراتفری برپا کردی۔ ایک مرحلہ پر ایوان کے وسط میں پہنچ کر کانگریس ارکان نے بیک آواز کہا کہ وزیراعظم جھوٹے ہیں، راجیہ سبھا میں اپو زیشن لیڈر غلام نبی آزاد نے بتایا کہ دونوں ایوانوں میں اگستا ویسٹ لینڈ معاملت پر بحث کے دوران کسی بھی رکن نے یہ نہیں کہا کہ یو پی اے لیڈروں نے کوئی رشوت لی تھی۔ انہوں نے کانگریس کے اسی مطالبہ کا اعادہ کیا کہ رشوت ستانی کیس میں کوئی لیڈر یا عہدیدار قصور وار پایا گیا تو سخت کارروائی کی جائے۔ تاہم راجیہ سبھا میں وزیراعظم کو طلب کرنے کے اصرار پر نائب صدرنشین کورین نے کہاکہ چونکہ وزیراعظم نے ایوان کے باہر الزامات عائد کئے ہیں، لہذا اپوزیشن پارٹی اس کا جواب بھی باہر حاصل کریں کیونکہ سیاسی نوعیت کی تقاریر کیلئے کرسی صدارت ذمہ دار نہیں ہوسکتی۔

TOPPOPULARRECENT