Saturday , November 25 2017
Home / شہر کی خبریں / نریندر مودی کی خارجی پالیسی بے جان

نریندر مودی کی خارجی پالیسی بے جان

پڑوسی ممالک کی ہندوستان میں خلل اندازی ، پروفیسر ایم وی راجیو گوڑا
حیدرآباد ۔ 26 ۔ مئی : ( سیاست نیوز ) : ترجمان آل انڈیا کانگریس کمیٹی و رکن راجیہ سبھا پروفیسر ایم وی راجیو گوڑا نے وزیر اعظم نریندر مودی کی خارجی پالیسی کو بے جان قرار دیتے ہوئے کہا کہ چین ہندوستان کی سرحدوں میں مداخلت کررہا ہے تو پاکستان پٹھان کوٹ پر حملہ کررہا ہے ۔ نریندر مودی کے 56 انچ کا سینہ شوپیس بن کر رہ گیا ۔ آر ایس ایس اور فرقہ پرست تنظیمیں زہریلی نفرت پھیلاتے ہوئے ملک کے عوام کو مذہب کی بنیاد پر تقسیم کررہے ہیں ۔ آج شام گاندھی بھون میں مرکزی حکومت کی دو سالہ کارکردگی پر پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے یہ بات بتائی ۔ اس موقع پر صدر تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی کیپٹن اتم کمار ریڈی کے علاوہ دوسرے قائدین موجود تھے ۔ پروفیسر ایم وی راجیو گوڑا نے مرکزی حکومت کی ناکامی پر میڈیا کو مختصر فلم دکھاتے ہوئے کہا کہ این ڈی اے حکومت تمام شعبوں میں ناکام ہوچکی ہے ۔ انتخابات سے قبل عوام کو اچھے دن کا خواب دکھایا گیا مگر اچھے دن نریندر مودی اور بی جے پی کے لیے غریب عوام کی امیدوں پر پانی پھر گیا ہے ۔ بیرونی ممالک میں موجود کالا دھن وطن واپس لاکر ہر شہری کے بنک اکاونٹ میں 15 لاکھ روپئے ڈپازٹ کرنے کا وعدہ دو سال بعد بھی مکمل نہیں ہوا ہے بلکہ بی جے پی کی سرپرستی حاصل کرنے والے دو بزنسمین ہزاروں کروڑ روپئے کا بنکوں کو نقصان کرتے ہوئے بیرونی ممالک میں عیش و عشرت کی زندگی گذار رہے ہیں ۔ پٹرولیم اشیاء کی قیمتوں میں بڑے پیمانے پر کمی کے باوجود عوام کو فائدے سے محروم کرتے ہوئے کمپنیوں کو فائدہ پہونچایا جارہا ہے ۔ کارپوریٹ کلچر کو فروغ دیتے ہوئے چلر فروش کو نقصان پہونچایا جارہا ہے ۔ اشیاء ضروریہ کی قیمتیں آسمان کو چھو رہی ہیں ۔ ملک میں نفرت کا ماحول پیدا کرتے ہوئے اقلیتوں کے جان و مال کو نقصان پہونچایا جارہا ہے ۔ اظہار خیال پر پابندی عائد کی جارہی ہے ۔ اہم مسائل سے عوام کی توجہ ہٹانے کے لیے ، گائے ، یوگا ، گھر واپسی ، لو جہاد کے علاوہ دوسرے مسائل کو موضوع بحث بناتے ہوئے عوام کو مذہب کی بنیاد پر تقسیم کیا جارہا ہے ۔ بی جے پی کے زیر قیادت این ڈی اے حکومت پر آر ایس ایس کا قبضہ ہوچکا ہے ۔ فرقہ پرست طاقتوں کو من مانی کرنے کی کھلی چھوٹ دی جارہی ہے ۔ تعلیمی نصاب کو زعفرانی رنگ دیا جارہا ہے ۔ تعلیمی اداروں اور یونیورسٹیز میں مداخلت کی جارہی ہے ۔ آر ایس ایس کے نظریات سے اتفاق نہ کرنے والے طلبہ پر حملے اور انہیں جھوٹے مقدمات میں پھنسایا جارہا ہے ۔ انہیں اسکالر شپس اور دوسری سہولتوں سے محروم کیا جارہا ہے ۔ بیرونی ممالک کا دورہ کرتے ہوئے دیکارڈ بنانے کی کوشش کرنے والے وزیر اعظم کی خارجی پالیسی کھوکھلی ہے ۔ چین کے صدر مذاکرات کے لیے ہندوستان پہونچتے ہیں اور ان کی فوج ہندوستانی سرحدوں میں مداخلت کرتے ہیں ۔ وزیر اعظم نریندر مودی کابل سے اسلام آباد نواز شریف کے ارکان خاندان کی تقریب میں پہونچتے ہیں اور پاکستان کی جانب سے پٹھان کوٹ پر حملہ کیا جاتا ہے ۔ 56 انچ کا سینہ دکھانے کے بجائے وزیر اعظم نے پاکستان کو پٹھان کوٹ کا معائنہ کرنے کی اجازت دی ہے ۔ ملک میں غذائی اجناس کی پیداوار گھٹ گئی ہے ۔ مودی حکومت تمام شعبوں میں ناکام ہوچکی ہے ۔ سماج کا ہر طبقہ مرکزی حکومت سے ناخوش ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT