Saturday , September 22 2018
Home / اضلاع کی خبریں / نظام آباد میں آبی پراجکٹ کی ترقی کیلئے جائزہ اجلاس

نظام آباد میں آبی پراجکٹ کی ترقی کیلئے جائزہ اجلاس

نظام آباد:4 ؍ اگست(سیاست ڈسٹرکٹ نیوز )ضلع نظام آباد کے آبی وسائل اور اس کے استعمال اور اس کی ترقی کے بارے میں ایک تفصیلی جائزہ اجلاس وزیر بھاری آبپاشی مسٹر ہریش رائو کی صدارت میں ان کی قیام گاہ پر منعقد ہوئی جس میں ضلع کے وزیر مسٹڑ پوچارام سرینواس ریڈی، ارکان اسمبلی محمد شکیل عامر بودھن، ہنمنت شنڈے جکل، اے رویندرریڈی یلاریڈی، وی

نظام آباد:4 ؍ اگست(سیاست ڈسٹرکٹ نیوز )ضلع نظام آباد کے آبی وسائل اور اس کے استعمال اور اس کی ترقی کے بارے میں ایک تفصیلی جائزہ اجلاس وزیر بھاری آبپاشی مسٹر ہریش رائو کی صدارت میں ان کی قیام گاہ پر منعقد ہوئی جس میں ضلع کے وزیر مسٹڑ پوچارام سرینواس ریڈی، ارکان اسمبلی محمد شکیل عامر بودھن، ہنمنت شنڈے جکل، اے رویندرریڈی یلاریڈی، وی پرشانت ریڈی بالکنڈہ، جیون ریڈی آرمور،باجی ریڈی گوردھن نظام آباد رورل، گمپا گوردھن کاماریڈی کے علاوہ رکن پارلیمنٹ شریمتی کے کویتا نے شرکت کی۔ اس اجلاس میں ضلع میں آبپاشی کے بارے میں تفصیلی جائزہ لیتے ہوئے آبی پراجیکٹ کی ترقی کیلئے کئے جانے والے اقدامات فنی تخمینہ اور دیگر مسائل کے بارے میں ایک رپورٹ تیارکرنے کی متعلقہ عہدیداروں کو ہدایت دی گئی نظام ساگر کنال کی جدید تعمیر کے کاموں کو جنگی خطوط پر انجام دینے کیلئے مسٹر پوچارام سرینواس ریڈی نے عہدیداروں کو ہدایت دیتے ہوئے کہا کہ شروع کردہ کاموں کو اکتوبر تک مکمل کریں گندھاری منڈل کے گجول ڈیام، کاٹے گام ڈیام کے کٹے کی اونچائی میں اضافہ کرنے کی صورت میں 3 ٹی ایم سی پانی اضافہ ہونے کے امکانات ہیںاگر ان کاموں کو انجام دینے کی صورت میں گندھاری، لنگم پیٹ منڈلوں کو اس کا فائدہ ہوگا اور 20 ہزار ایکر اراضی سیراب ہوگا۔ لہذا ان کاموں کو انجام دینے کیلئے رکن اسمبلی یلاریڈی رویندرریڈی عہدیداروں سے خواہش کی۔ پٹواری تالاب کے ذریعہ پوچارام پراجیکٹ کو پانی سربراہ کرنے کی صورت میں مزید پانی سربراہی کے امکانات ہیں۔ ماکلور منڈل کے 18 دیہاتوں کو لفٹ کے ذریعہ پانی پہنچانے کا مطالبہ کرتے ہوئے رکن اسمبلی آرمور مسٹر جیون ریڈی نے کہا کہ اس کیلئے امراد تانڈہ پر پمپنگ ہائوز قائم کرنے کی صورت میں 25 ہزار ایکر زائد اراضی سیراب کے امکانات ہیں اور اس کیلئے 100 کروڑ روپئے درکار ہے۔ فتح پور سبیریال لفٹ ایریگیشن کیلئے 38 کروڑ روپئے منظور کرنے کی صورت میں 6 ہزار ایکر اراضی کو پانی سیراب ہوگا۔ نواب تالاب سے 7 دیہاتوں کو پانی سیراب کرنے کیلئے 12 کروڑ روپئے پائپ لائن تنصیب کرنے کی رکن اسمبلی بالکنڈہ مسٹر پرشانت ریڈی مسٹر ہریش رائو کو واقف کراتے ہوئے کہا کہ 12 کروڑ روپئے سے کام انجام دیتے ہوئے 3 ہزار ایکر اراضی کو پانی سیراب کرنے کی خواہش کی۔ گٹو پوڑیچنا واگو کے اسکیم کی عمل آوری کیلئے نئے تخمینہ تیار کریںاور کمر پلی، مورتاڑ منڈلوں کے 12 تالابوں کو گٹو پوڑیچنا واگو کے ذریعہ پانی فراہم کرنے کے امکانات ظاہر کیا۔ گوداوری ندی پر موجودہ 6 لفٹ ایریگیشنوں کو استعمال میں لانے کیلئے 10 کروڑ روپئے منظور کرنے کی گمبھی ریال، کوپن پلی، پچا لا نڑکوڑو، تاڑلا رامپور لفٹ ایریگیشن کاموں کو شروع کرنے کیلئے خواہش کی۔ رکن اسمبلی جکل ہنمنت شنڈے نے مسٹر ہریش رائو کو واقف کراتے ہوئے کہا کہ لینڈی پراجیکٹ کی تکمیل کی صورت میں ضلع کا کوٹہ مختص کرنے کیلئے مہاراشٹرا حکومت کی رضامندی ظاہر کی ہے لہذا تلنگانہ حکومت کی جانب سے فنڈس ادا کرنے کیلئے کولاس نالہ کے پانی کے استعمال کیلئے نئے کاموں کو شروع کرنے کی خواہش کی۔ کاماریڈی حلقہ میں تالابوں، کنٹوں کی مرمت کیلئے جنگی پیمانے پر فنڈس کی منظوری کی رکن اسمبلی مسٹر گمپا گوردھن نے ہریش رائو کو واقف کروایا۔ بودھن حلقہ کے لفٹ ایریگیشن کاموں کو جنگی خطوط پر تکمیل کرتے ہوئے لفٹ ایریگیشن کے ذریعہ پانی سیراب کیلئے اقدامات کرنے کی رکن اسمبلی بودھن مسٹر شکیل عامر نے خواہش کی۔ ڈچپلی حلقہ میں واقع نظام ساگر کنالوں کی مرمت کیلئے فنڈس کی منظوری عمل میں لائی گئی تھی لیکن سابق حکومت نے ان فنڈس کو دوسرے مقصد کیلئے استعمال کیا گیا لہذا دوبارہ اس فنڈس کی منظوری کرنے کی خواہش کی۔ ان کاموں کا جائزہ لیتے ہوئے جنگی خطوط پر انجام دینے کیلئے عہدیداروں کو ہدایت دی۔ اس اجلاس میں سیاسی نمائندوں کے علاوہ اعلیٰ عہدیدار بھی موجود تھے۔
٭٭٭

TOPPOPULARRECENT