Tuesday , April 24 2018
Home / اضلاع کی خبریں / نظام آباد میں بغیر لے آؤٹ زمینات کا کاروبارجاری

نظام آباد میں بغیر لے آؤٹ زمینات کا کاروبارجاری

نزاعی، غیر قانونی زمینات نہ خریدنے عوام کو مشورہ
نظام آباد:13؍ اپریل (سیاست ڈسٹرکٹ نیوز)سینئر ٹی آرایس قائد یٰسین صابری ، حلیم قمر ڈائریکٹرزرعی مارکٹ کمیٹی نظام آباد ، اختر احمد نے اپنے ایک بیان میں کہا کہ نظام آباد میں بغیر لے آئوٹ زمینات کا کاروبار ان دنوں زور و شور سے جاری ہے جس کی مثال نہیں ملتی ۔ تالابوں کے شکم اور سرکاری اسائنڈ منٹ لینڈ روڈ سارنگ پور جانکم ، سی آر پی کے عقب ریلوے لائن کے پاس غیر قانونی جس سے غریب عوام کو دھوکہ دیا جارہا ہے ۔ان قائدین نے کہا کہ ہوناتو یہ چاہئے جہاں سینکڑوں ایکر زمینات میں پلاٹنگ ہورہی ہے وہ 10% زمین اوپن جگہ گارڈن ، کمیونٹی ہال ، اسکول کیلئے اس زمین میں سے چھوڑنا چاہئے اور 33 فٹ روڈ س ہونا چاہئے ایسا نہ ہوکے 25 فٹ روڈ ، بغیر لے آئوٹ کے پلاٹس بناکر غریب عوام کے آنکھوں میں دھول جھونک رہے ہیں ۔ یٰسین صابری ، حلیم قمر ، اختر احمد نے کہا کہ غیر قانونی کاروبار کرنے والے لینڈ مافیا کو GD ایکٹ کے تحت کیس بک کرناDPO کا فرض ہے ۔ ان حالات کی اور 22 ایکر اراضی سارنگ پور میں سرکاری اراضی میں گھس کر زمینات والے پلاٹس کو فروخت کردے رہے ہیں جس کی اطلاع بذریعہ RTI اور درخواست میں تفصیلی معلومات DPO ، تحصیلدار رورل ، ضلع کلکٹر اور لینڈ سروے ریکارڈ میں اس کی اطلاع دی جاچکی ہے ایک ٹیم سرویر کے ساتھ پٹواری اور گڑا ور زمینات کا معائنہ کرکے گئے بعد میں آج کل تحصیلدار ، سرویر ADE ، DPO کی ٹیم مزید معائنہ کرکے لینڈ گرابرس اوربغیر لے آئوٹ پلاٹس کو منہدم کردیا جائیگا اور قانونی کارروائی کی جائیگی عوام سے خواہش کی جاتی ہے کہ ایسے نزاعی غیر قانونی ، بغیر لے آئوٹ کے پلاٹس نہ خریدیں اور اپنے لاکھوں روپئے ضائع ہونے سے بچائیں ۔ زمینات والوں کو سختی سے پیش آئیں ۔ یٰسین صابری ، حلیم قمر ، اختر احمد نے کہا کہ سرکاری زمین سارنگ پور علاقہ میں جو 22 ایکر ہے حاصل کرکے ڈبل بیڈروم بناکر غریبوں میں دیا جائے ۔

TOPPOPULARRECENT