Sunday , June 24 2018
Home / اضلاع کی خبریں / نظام آباد میں جوار کے کسانوں کا دھرنا

نظام آباد میں جوار کے کسانوں کا دھرنا

اقلیت قیمت ادا کرنے کا مطالبہ ، کلکٹر کو یادداشت

اقلیت قیمت ادا کرنے کا مطالبہ ، کلکٹر کو یادداشت
نظام آباد :19؍ مارچ(سیاست ڈسٹرکٹ نیوز ) لال جوار اور سفید جوار کو حکومت کی جانب سے خریدتے ہوئے اقل ترین قیمت ادا کریںکا مطالبہ کرتے ہوئے کسانوں کی تنظیم کی جانب سے کلکٹریٹ پر بڑے پیمانے پر دھرنا دیا گیا ضلع نظام آباد میں 45 ہزار ایکر اراضی پر لال اور سفید جوار کی کاشت کی جارہی ہے اور ملک بھر میں لال جوار کی ضلع نظام آباد سے شناخت کی جاتی ہے لیکن چند تخم کے تاجر کاشت سے قبل اس کی قیمت دینے کا تیقن دیتے ہوئے کاشت کے بعد آنے والی فصل کو اس کی قیمت ادا کرتے ہوئے کسانوں کے ساتھ زبردست دھاندلی کررہے ہیں۔ ہزاروں کسانوں کو تاجروں کو شکار ہونا پڑرہا ہے۔ لہذا حکومت کی جانب سے کم از کم تین ہزار روپئے قیمت ادا کرتے ہوئے خریدنے کی صورت میں کسانوں کے ساتھ انصاف کیا جاسکتا ہے۔ کسانوں کی تنظیموں کے ریاستی سکریٹری پربھاکر نے کلکٹریٹ پر منعقدہ دھرنا سے مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ آرمور ڈیویژن کے تینوں حلقوں میں 45 ہزار ایکر پر کاشت کی جاری ہے ابتداء میں تاجر معاہدہ کرتے ہوئے بعد میں 500تا 600 روپئے قیمتیں کم کررہے ہیں اور ہر تھیلے میں پانچ تا دس کلو ترگو نکال رہے ہیں۔2014ء میں 2200تا2500 روپئے خرید کر 3800 تا 4000 روپئے تک فروخت کرتے ہوئے کروڑہا روپئے کی آمدنی حاصل کی ہے۔ لال جوار کی پالیسی نہ ہونے کی وجہ سے کسانوں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہا ہے اس سلسلہ میں رکن اسمبلی آرمور پہل کرتے ہوئے کسانوں کی امداد کرنے کی صورت میں ان کے ساتھ انصاف کیا جاسکتا ہے انہوں نے ضلع کلکٹر کو ایک یادداشت بھی پیش کی۔

TOPPOPULARRECENT