Monday , January 22 2018
Home / شہر کی خبریں / نظام آباد پولیس تحویل میں نوجوان کی مشتبہ موت

نظام آباد پولیس تحویل میں نوجوان کی مشتبہ موت

ریاستی اقلیتی کمیشن کی کلکٹر اور ایس پی سے رپورٹ طلبی

ریاستی اقلیتی کمیشن کی کلکٹر اور ایس پی سے رپورٹ طلبی
حیدرآباد۔23مارچ ( سیاست نیوز) ریاستی اقلیتی کمیشن نے ضلع نظام آباد میں ہوئی محمد ساجد کی پولیس تحویل میں موت پر سخت نوٹ لیتے ہوئے آج از خود کارروائی کا آغاز کردیا ہے ۔ جناب عابد رسول خان صدرنشین ریاستی اقلیتی کمیشن آندھراپردیش و تلنگانہ نے آج ضلع کلکٹر نظام آباد اور ضلع سپرنٹنڈنٹ پولیس نظام آباد کو نوٹس جاری کرتے ہوئے اندرون ایک ہفتہ محمد ساجد کی پولیس تحویل میں موت پر ابتدائی رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت دی ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ محمد ساجد کی پولیس تحویل میں موت کی اطلاع اور اخبارات میں خبروں کی اشاعت کے بعد ریاستی اقلیتی کمیشن نے کارروائی کرنے کا فیصلہ کیا جس کے فوری بعد ضلع کے دونوں اعلیٰ حکام کو نوٹس جاری کردی گئی ہے تاکہ واقعہ کی ابتدائی تحقیقاتی رپورٹ موصول ہونے کے بعد ضابطہ کارروائی کا آغاز کیا جاسکے ۔ جناب عابد رسول خان نے بتایا کہ اس طرح کے واقعات سے پولیس کی شبیہہ متاثر ہوتی ہے اور انتظامیہ میں بہتری پیدا کرنے کے اقدامات پر مجبور کرتے ہیں لیکن اس کے باوجود بھی اگر حالات تبدیل نہیں ہوئے ہیں تو ایسی صورت میں کمیشن سخت کارروائی کرے گا ۔ انہوں نے بتایا کہ اندرون ایک ہفتہ ایس پی اور کلکٹر کی جانب سے ابتدائی رپورٹ موصول ہونے کے بعد خود کمیشن اپنے طور پر واقعہ کی تفصیلی تحقیقات کا آغاز کرے گا اور حکومت سے سفارش کی جائے گی کہ مقتول کے ورثاء کو ایکس گریشیا کی اجرائی عمل میں لائی جائے چونکہ محمد ساجد انتہائی غریب خاندان سے تعلق رکھنا والا تھا اور خاندان کی کسمپرسی کو دور کرنے کے علاوہ وہ دو وقت کی روٹی کیلئے رکشہ چلایا کرتا تھا ۔

TOPPOPULARRECENT