Tuesday , December 19 2017
Home / اضلاع کی خبریں / نظام دکن شوگرس فیکٹری

نظام دکن شوگرس فیکٹری

بودھن ۔ 17 ۔ ڈسمبر ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز ) نظام دکن شوگرس فیکٹری شکر نگر یونٹ کو حکومت کی تحویل میں لینے کا مطالبہ کرتے ہوئے NSF بچاؤ کمیٹی کی طرف سے دھرناک چوک امبیڈکر چوراستہ پر جاری زنجیری بھوک ہڑتال میں حصہ لینے والے کسانوں اور فیکٹری ملازمین سے اظہار یگانگت کرنے سابقہ رکن پارلیمنٹ ضلع نظام آباد مدھویاکشی گوڑ ہڑتالی کیمپ پہونچے اس موقع پر انہوں نے اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے ٹی آر ایس پارٹی پر نظام شوگر فیکٹری کو مکمل طور پر برباد کرنے کا الزام عائد کرتے ہوئے بتایا ٹی آر ایس برسراقتدار آنے سے قبل NSF کو حکومت تحویل میں لینے کا عوام سے وعدہ کیا تھا لیکن ٹی آر ایس کو اقتدار حاصل ہوتے ہی اپنے تمام وعدوں کو فراموش کرتے ہوئے نظام شوگر فیکٹری کو مکمل طو رپر بند کرنے کوشاں ہے ۔ مسٹر یاکشی گوڑ نے کہا اس سال کسانوں کا گنا دیگر فیکٹری کو روانہ کرنے کی ذمہ داری ٹی آر ایس حکومت نے اٹھائی تھی لیکن تلنگانہ حکومت اپنے وعدے کے برخلاف خاموشی اختیار کرلی ہے ۔ کسان مجبوراً کسی نہ کسی طرح یہاں سے دوردراز واقع کاماریڈی شوگر فیکٹری و دیگر شکر سازی کے کارخانوں کو گنا روانہ کررہے ہیں ۔ ملازمین فیکٹری بند ہونے کی وجہ سے بے روزگار ہوچکے ہیں انہوں نے کہا کہ رکن پارلیمنٹ کے کویتا NSF کے کسانوں و ملازمین کو مکمل طور پر نظرانداز کرچکی ہیں ۔ مسٹر مدھوگوڑ یاکشی کے ساتھ نظام آباد کے کانگریسی قائدین جناب سمیر احمد اور سید نجیب علی کے علاوہ مقامی قائدین سید رفیع الدین ، دامودھر ریڈی ، شیخ فصیح الدین ، گنگاشنکر ، پوتا ریڈی و دیگر کانگریس پارٹی کے قائدین ساتھ میں موجود تھے ۔

TOPPOPULARRECENT