Saturday , December 16 2017
Home / Top Stories / نظام رباط میں حجاج کرام کیلئے بہترین اور مثالی خدمات

نظام رباط میں حجاج کرام کیلئے بہترین اور مثالی خدمات

1,284 عازمین کو مفت رہائش کے ذریعہ 7 تا 8 کرو ڑ روپئے کی بچت ، انتخاب کے طریقہ میں شفافیت

٭ 1996ء سے 2016ء تک 91,421 حجاج کرام نے خدمات سے استفادہ کیا
٭ دن میں ایک مرتبہ مفت طعام کے علاوہ انٹرنیٹ ، وہیل چیر، ہر منزل پر آب زم زم کی سہولت
نظام رباط سے استفادہ کے اہل
تلنگانہ : حیدرآباد ، محبوب نگر ، میدک، نلگنڈہ، نظام آباد، عادل آباد ، کریم نگر ، ورنگل ، رنگاریڈی ، کھمم
کرناٹک : بیدر ، گلبرگہ ، رائچور ، یادگیر
مہاراشٹرا : عثمان آباد ، اورنگ آباد ، بیڑ ، ناندیڑ ، پربھنی ، لاتور ؍ اُدگیر ، ہنجولی ، جالنہ

حیدرآباد۔ 23 مارچ (سیاست نیوز) حجاج کرام اور معتمرین کی خدمت ایک ایسی سعادت ہے جو خوش نصیبوں کو حاصل ہوتی ہے۔ ہر شخص کی یہ خواہش ہوتی ہے کہ اللہ کے ان مہمانوں کا زیادہ سے زیادہ اکرام کرے اور ان کی ہر ضرورت کو بحسن و خوبی پورا کرے۔ اسی جذبہ کے تحت آصف جاہی حکومت نے سعودی عرب میں اللہ کے مہمانوں کی خاطر جو خدمات انجام دی ہیں، اس کا سلسلہ آج بھی جاری ہے۔ مکہ مکرمہ میں ’’رباطِ نظام‘‘ حرم شریف سے بالکل قریب واقع ہے اور یہاں حجاج کرام کو مفت رہائش فراہم کی جاتی ہے۔ وقت کے ساتھ ساتھ حجاج کرام کی خدمات میں بھی کافی وسعت دی گئی ہے اور انہیں دیگر کئی سہولیات فراہم کی جارہی ہیں جس کا سہرا ناظر رباط حسین محمد الشریف کے سَر جاتا ہے۔ رباط نظام میں تلنگانہ کے علاوہ کرناٹک اور مہاراشٹرا کے اُن علاقوں سے تعلق رکھنے والے افراد کو سہولت دی جاتی ہے جو پہلے نظام حکومت میں شامل تھے۔ ان میں کرناٹک کے علاقہ بیدر، گلبرگہ، رائچور، یادگیر اور مہاراشٹرا کے علاقہ عثمان آباد، اورنگ آباد، بیڑ، ناندیڑ، پربھنی، لاتور؍ اُدگیر، ہنجولی اور جالنہ شامل ہیں۔ ہزایکسیلنسی نظام نواب افضل الدولہ نے 18ویں صدی میں مکہ مکرمہ کے قریب جائیدادیں خریدی تھیں جنہیں وقف کردیا گیا۔ بعدازاں 1967ء میں ہزایکسیلنسی نظام میر برکت علی خاں مکرم جاہ بہادر نے ان جائیدادوں کی شریف محمد ایڈوکیٹ کے ذریعہ بازیابی کو یقینی بنایا اور اسے رائل کورٹ مکہ المکرمہ میں ’’نظام اسٹیٹ‘‘ سے آنے والے حجاج کرام کیلئے ’’وقف جائیدادوں‘‘ کے طور پر درج رجسٹر کرایا۔ حجاج کرام کو یہاں مفت رہائش کے سبب انہیں مقررہ فیس ادا کرنے کی ضرورت نہیں رہتی، چنانچہ آئندہ حج کے سلسلے میں نظام اسٹیٹ سے تعلق رکھنے والے 1284 حجاج کرام کا قرعہ اندازی کے ذریعہ انتخاب عمل میں آئے گا۔ ناظر حسین محمد الشریف عنقریب حیدرآباد کا دورہ کریں گے اور حج کمیٹی کے ساتھ ساتھ حکومت تلنگانہ کے تعاون سے اُن عازمین کو قرعہ اندازی میں شامل کیا جائے گا جن کا عزیزیہ میں رہائش کیلئے انتخاب عمل میں آئے گا چنانچہ 1284 عازمین کی فہرست کو قطعیت دی جائے گی اور دوسرے ہی دن یہ فہرست www.hrubath.org کے علاوہ مقامی میڈیا پر دستیاب رہے گی۔ ان منتخبہ عازمین کو حج کمیٹی کی ’’محفوظ رہائشی اسکیم‘‘ سے استثنیٰ رہے گا اور مکۃ المکرمہ میں رہائش کیلئے کوئی رقم ادا کرنی نہیں پڑے گی۔ اس طرح تقریباً 7 تا 8 کروڑ روپئے کی بچت ہوگی۔ اس بار عازمین کیلئے ایک وقت مفت طعام کا بھی اہتمام رہے گا۔ گزشتہ سال تین مرتبہ مفت طعام کا اہتمام کیا گیا لیکن جب حجاج کرام کی تعداد 678 تھی اور اب اسے بڑھاکر 1284 کیا جارہا ہے۔ نظام رباط کو 1996ء سے 2016ء تک جملہ 91,421 حجاج کرام کی خدمت کی سعادت حاصل ہوئی۔ شاہ فیصل بن عبدالعزیز آل سعود کے دور میں یہ اعلان کیا گیا تھا کہ سعودی عرب میں اگر کسی غیرملکی شہری کی جائیداد موجود ہے تو اسے درج رجسٹر کرانا ہوگا یا پھر مقررہ وقت میں اسے فروخت کردینا ہوگا چنانچہ نظام ہشتم مکرم جاہ بہادر نے جناب شریف محمد ایڈوکیٹ کا اس مقصد کیلئے تقرر کیا کیونکہ وہ نہ صرف سعودی شہری تھے بلکہ ان کا شمار معزز شخصیتوں میں ہوتا تھا۔ اس کے ساتھ ساتھ وہ وزیر پٹرولیم کے قانونی مشیر بھی تھے، جن کا پس منظر ایک سرکردہ وکیل کی حیثیت سے حیدرآباد سے بھی رہا۔ اُس وقت اِن اوقافی جائیدادوں کی بازیابی اور ان کا تحفظ یقینی بنانے کیلئے انتھک جدوجہد کی گئی ۔ اس مقصد میں انہیں کامیابی بھی ملی، اور 1969ء سے 1996ء میں ان کی وفات تک تقریباً 27 سال نظامِ رباط کے ذریعہ حجاج کرام کو خدمات فراہم کی جاتی رہی۔ ناظر شریف محمد ایڈوکیٹ کے انتقال کے بعد رائل کورٹ نے ان کے فرزند جناب حسین محمد الشریف کو قانونی طور پر جانشین مقرر کیا۔ اس وقت حرم شریف کی توسیع کا کام بڑے پیمانے پر شروع کیا جارہا تھا چنانچہ ان وقف جائیدادوں کا تحفظ کرتے ہوئے متبادل مقامات پر انتظام و انصرام ایک دشوارکن مرحلہ تھا۔ حجاج کرام کی تعداد میں بھی اضافہ ہوتا جارہا ہے لیکن جناب حسین محمدالشریف نے ہر سال تقریباً ایک ہزار حجاج کرام کی رہائش کو یقینی بنایا۔ اس کے علاوہ انہیں دیگر کئی خدمات بھی فراہم کی جارہی ہیں۔ انہوں نے معتمرین کیلئے آن لائن سسٹم متعارف کیا اور انتخاب کے طریقہ کار کو مزید شفاف بنایا۔ ناظر رباط جناب حسین محمدالشریف کا یہ کہنا ہے کہ ایڈیٹر روزنامہ سیاست جناب زاہد علی خاں سرپرست کی رہنمائی میں حجاج کرام کی بہتر خدمات کا انہیں موقع فراہم ہوا۔ اس کے علاوہ انہوں نے نواب خیرالدین علی خاں کے ساتھ ساتھ تلنگانہ کے ڈپٹی چیف منسٹر جناب محمد محمود علی کا بھی انہیں بھرپور تعاون حاصل رہا ہے۔ نظام رباط میں حجاج کرام کی سہولت کیلئے جو خدمات اس بار دستیاب رہیں گی ، ان میں کپڑوں کی مفت دھلوائی، اِستری کی سہولت، مفت صابن، مفت انٹرنیٹ، مفت وہیل چیرس ، حرم شریف تک بس خدمات ، ایر کنڈیشنڈ کمرے اور لفٹ کی سہولت کے علاوہ ہر منزل پرآب زم زم کی سہولت اور نماز کی ادائیگی کیلئے خصوصی سہولت وغیرہ شامل ہیں۔ توقع ہے کہ آئندہ برسوں میں زیادہ سے زیادہ حجاج کرام اور معتمرین کی خدمات کا موقع فراہم ہوگا۔

TOPPOPULARRECENT