Thursday , January 24 2019

نعش روانہ کرنے انگولا کی کمپنی نے 16 لاکھ روپئے طلب کئے

لوانڈہ ؍ دیوریا ۔ 6 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) انگولا کی ایک کمپنی نے ایک دھماکے میں ہلاک ہوئے ہندوستانی ملازم کے ارکان خاندان سے اس کی نعش ہندوستان بھیجنے کیلئے 16 لاکھ روپئے طلب کئے ہیں۔ سوریا دیویا دو نامی شخص بیسٹ انگولا میٹل فیکٹری میں برسرکار تھا۔ گذشتہ سال 26 نومبر کو ہوئے ایک دھماکہ میں وہ شدید طور پر زخمی ہوگیا تھا جسے ہاسپٹل میں ش

لوانڈہ ؍ دیوریا ۔ 6 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) انگولا کی ایک کمپنی نے ایک دھماکے میں ہلاک ہوئے ہندوستانی ملازم کے ارکان خاندان سے اس کی نعش ہندوستان بھیجنے کیلئے 16 لاکھ روپئے طلب کئے ہیں۔ سوریا دیویا دو نامی شخص بیسٹ انگولا میٹل فیکٹری میں برسرکار تھا۔ گذشتہ سال 26 نومبر کو ہوئے ایک دھماکہ میں وہ شدید طور پر زخمی ہوگیا تھا جسے ہاسپٹل میں شریک کیا گیا تھا لیکن یکم ؍ ڈسمبر کو وہ زخموں سے جانبر نہ ہوسکا تھا۔ اس دن سے لیکر آج تک یادو کے ارکان خاندان کمپنی سے درخواست کررہے ہیں کہ اس کی نعش ہندوستان بھیجی جائے لیکن حیرت انگیز طور پر کمپنی نے نعش بھیجنے کے لئے 16 لاکھ روپئے طلب کئے ہیں۔ نعش انتہائی مسخ ہوچکی ہے۔ کمپنی کے ڈائرکٹر وینوکپاس نے وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ نعش چونکہ شدید طور پر مسخ ہوچکی ہے لہٰذا اس کی روانگی کیلئے خصوصی انتظامات کرنے پڑیں گے جس کیلئے 16 لاکھ روپئے کے مصارف ہوں گے۔ اسی دوران متوفی کے ارکان خاندان نے صدرجمہوریہ، وزیراعظم، وزیراعلیٰ اکھیلیش یادو اور ڈسٹرکٹ مجسٹریٹ کو مکتوبات تحریر کرتے ہوئے ان سے اس معاملہ میں تعاون طلب کیا ہے۔ دریں اثناء ڈسٹرکٹ مجسٹریٹ شرد کمار سنگھ نے کہا کہ انہیں اس واقعہ کا پورا علم ہے جس کے بعد وزارت داخلہ کو مناسب اقدامات کرنے کی ہدایت جاری کی گئی ہے۔

TOPPOPULARRECENT