Tuesday , November 21 2017
Home / شہر کی خبریں / نعیم کی ڈائری سے اعلیٰ پولیس عہدیداروں اور سیاستدانوں کی نیندیں حرام

نعیم کی ڈائری سے اعلیٰ پولیس عہدیداروں اور سیاستدانوں کی نیندیں حرام

بچنے کیلئے حکمران جماعت کا سہارا ‘ تحقیقات کو پیچیدہ اور متنازعہ بنانے کی کوششوں کا شبہ
حیدرآباد۔ 16 اگست ( سیاست نیوز) گینگسٹر نعیم کے جال میں پھنس کر اس کی مجرمانہ سرگرمیوں کو وسیع کرنے میں مدد کرنے والے پولیس عہدیدار اپنے بچاؤ کیلئے تمام سیاسی جماعتوں کے قائدین کو مجرمانہ نٹ ورک سے جوڑتے ہوئے کیس کو زیادہ سے زیادہ پیچیدہ بنانے کی کوشش کررہے ہیں ۔ یہ بات کافی مشہور ہیکہ پولیس کبھی کسی کی دوست نہیں ہوتی ‘ جب تک کام نکلتا ہے نکال کر اپنے لئے وبال جان بننے والے کو راستہ سے ہٹا دیتی ہے ۔ سابق نکسلائٹ نعیم کو ڈان بنانے والی پولیس ہے ‘ نکسلائٹس سرگرمیوں کو کچلنے کیلئے نعیم کا استعمال کرنے والی پولیس نے قتل و غارت گری ‘ اراضیات کو ہڑپ لینے ‘ اغوا اور دوسرے مالی لین دین کے معاملہ میں نہ صرف نعیم کی مدد کی ہے بلکہ اس کے مجرمانہ سرگرمیوں کے چند پولیس عہدیدار حصہ دار بھی بنے ہیں اور اس کی مدد سے کئی بے نامی جائیدادوں کے مالک بھی بن گئے ہیں اور محکمہ پولیس کے چند اعلیٰ پولیس عہدیدار یہ سمجھ رہے تھے کہ وہ نعیم کا استعمال کررہے ہیں مگر نعیم نے اپنی ڈائری میں تمام مجرمانہ سرگرمیوں کے حصہ دار رہنے والے پولیس ملازمین اور اس سے فائدہ اٹھانے والے سیاستدانوں کے نام ڈائری میں تحریر کیا تاکہ اس کو کچھ ہوتا ہے تو اس کا ساتھ دینے والے اور فائدہ اٹھانے والوں کو بھی برابر کی سزا ملے ۔ نعیم کی ڈائری ہاتھ لگتے ہی اس کا ساتھ دینے والے اعلیٰ پولیس عہدیداروں کی نیندیں اُڑ گئی ہیں ‘ ساتھ ہی سیاستدان بھی پریشان ہیں ۔ نعیم کی مجرمانہ سرگرمیوں میں تعاون کرنے والے پولیس کو اپنے بچاؤ کی فکر ہے اور وہ نعیم کے معاملہ کو اتنا پیچیدہ کردینا چاہتے ہیں کہ شک کی سوئی ان کی طرف نہ آئے ۔ اسلئے مختلف سیاسی قائدین کے ناموں کو دبے لفظوں میں میڈیا میں افشاء کیا جارہا ہے ۔ باوثوق ذرائع سے پتہ چلاہیکہ جن قائدین کے نعیم کے ساتھ تعلقات تھے پہلے وہ دوسری جماعتوں میں شامل تھے ‘ اب حکمران ٹی آر ایس میں شامل ہوگئے ہیں ۔ اگر ان کے نام منظر عام پر آتے ہیں اور اعلیٰ پولیس عہدیداروں کے انکشافات ہوتے ہیں تو اپوزیشن جماعتیں حکومت پر ٹوٹ پڑسکتی ہیں ۔ حکومت اپنی محکمہ پولیس کی ساکھ بچانے کیلئے میدان میں اترے گی ۔ اس طرح سانپ بھی مرجائے گا اور لکڑی بھی نہیں ٹوٹے گی کے مترادف بچنے کی کوشش میں مصروف ہے ۔ باوثوق ذرائع سے پتہ چلاہیکہ ابھی سے ایس آئی ٹی پر دباؤ شروع ہوچکا ہے ۔ باوثوق ذرائع سے پتہ چلاہیکہ محکمہ پولیس کے ماسٹر مائنڈس اس کیس کو پیچیدہ کے ساتھ تنازعہ بنانے کی کوئی کسر نہیں چھوڑ رہے ہیں ۔

TOPPOPULARRECENT