Wednesday , April 25 2018
Home / شہر کی خبریں / نعیم گینگ کی سرگرمیوں کی سی بی آئی تحقیقات پر زور

نعیم گینگ کی سرگرمیوں کی سی بی آئی تحقیقات پر زور

گینگسٹر کو حکومتوں کی سرپرستی حاصل تھی ۔ ڈاکٹر کے نارائنا کا الزام
حیدرآباد 13 فروری (سیاست نیوز) سکریٹری سی پی آئی ڈاکٹر کے نارائنا نے گینگسٹر نعیم کو سرکاری غنڈہ قرار دیتے ہوئے الزام عائد کیاکہ نعیم کو سابقہ حکومتوں کی نہ صرف مکمل پشت پناہی حاصل تھی بلکہ اس کو اسلحہ بھی حکومت نے فراہم کئے تھے۔ نعیم کے متاثرین کے ساتھ ایک اجلاس سے خطاب میں ڈاکٹر نارائنا نے نعیم گینگ کی کارستانیوں و سرگرمیوں کے تمام واقعات کی سی بی آئی تحقیقات کا مطالبہ کیا تاکہ نعیم کے متاثرین سے مکمل انصاف ہوسکے۔ انہوں نے کہا کہ ایس آئی ٹی تحقیقات سے حقائق کا انکشاف نہیں ہوسکے گا اور متاثرین کے ساتھ انصاف کی توقع نہیں کی جاسکے گی۔ انھوں نے کہاکہ نعیم کا انکاؤنٹر کروانے کی چیف منسٹر چندرشیکھر راؤ میں ہمت نہیں ہے ۔ نعیم کا انکاؤنٹر کروانے کے حقیقی ذمہ دار امیت شاہ ہیں اور انھوں نے نعیم کا انکاؤنٹر کروایا ۔ انہوں نے کہاکہ نعیم کی قبضہ کی ہوئی اراضیات و دیگر املاک کی نشاندہی کرکے ان اراضیات و املاک پر قبضہ کرکے حاصل کرنے جدوجہد شروع کرنے کی بائیں بازو جماعتوں سے اپیل کی۔ انھوں نے کہاکہ نعیم کی تمام تر سرگرمیوں، ظلم و زیادتیوں سے سابقہ تمام چیف منسٹرس اور وزرائے داخلہ واقف تھے۔ ڈاکٹر نارائنا نے چیلنج کیاکہ اگر سابقہ چیف منسٹروں اور وزرائے داخلہ میںہمت ہو تو واقفیت نہ رہنے کا اظہار کریں۔ آج کے اجلاس میں مختلف جماعتوں عوامی تنظیموں کے قائدین نے نعیم گینگ کی سرگرمیوں کی سی بی آئی تحقیقات کی ضرورت پر زور دیا تلنگانہ سکریٹری سی پی آئی وینکٹ ریڈی کی صدارت میں منعقدہ اجلاس سے ویراسم قائد ورا ورا راؤ، جسٹس چندرا کمار، سی پی آئی ایم قائد مسٹر ڈی جی نرسمہا راؤ، نیو ڈیموکریسی قائد گوردھن، تلنگانہ جوائنٹ ایکشن کمیٹی کے نمائندے مسٹر ایس پربھاکر ریڈی نے بھی خطاب کیا۔ نعیم کے متاثرین سے انصاف کے لئے جدوجہد کرنے ایک کمیٹی تشکیل دی گئی اور 27 فروری کو ضلع ورنگل ، 7 مارچ کو محبوب نگر ، 18 مارچ کو بھونگیر، ضلع میں تشکیل دی گئی کمیٹی کے قائدین دورہ کریں گے اور بہت جلد آئندہ کے لائحہ عمل کو قطعیت دینے کا فیصلہ کیا گیا۔

TOPPOPULARRECENT