Friday , June 22 2018
Home / ہندوستان / نفرت انگیز تقاریر پر ایف آئی آر کے خلاف امیت شاہ ہائیکورٹ سے رجوع

نفرت انگیز تقاریر پر ایف آئی آر کے خلاف امیت شاہ ہائیکورٹ سے رجوع

الہ آباد۔ 9 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) بی جے پی لیڈر امیت شاہ نے آج الہ آباد ہائیکورٹ سے رجوع ہوکر ان کے خلاف داخل کردہ ایف آئی آر کو چیلنج کیا ہے۔ بجنور اور شاملی اضلاع میں جلسہ عام کے دوران ان کی مبینہ نفرت انگیز تقاریر پر حکومت یو پی نے ایف آئی آر درج کروایا تھا۔ جسٹس ارون ٹنڈن اور ستیش چندرا پر مشتمل ایک ڈیویژن بنچ نے اس معاملہ کی سماعت کل مقرر کی ہے جبکہ بنچ نے ریاستی حکومت کو ہدایت دی ہیکہ وہ دونوں مقامات پر امیت شاہ کی جانب کی گئی تقاریر کی سی ڈیز بھی داخل کی جائے۔ امیت شاہ جو یو پی میں بی جے پی کے انچارج ہیں اور بی جے پی وزارت عظمیٰ کے امیدوار تعزیرات ہند کی دفعہ 153A کے تحت (دو فرقوں میں نفرت پھیلانا) مقدمہ درج کیا گیا ہے۔ اس کے علاوہ مذہبی بنیادوں پر منافرت پیدا کرنے کی پاداش میں عوامی نمائندگان قانون کی دفعہ 125 کے تحت بھی مقدمہ درج کیا گیا ہے۔ گذشتہ ہفتہ کی گئی تقاریر میں امیت شاہ نے ہندوؤں سے کہا تھا کہ وہ مسلمانوں سے انتقام لیں۔ مظفرنگر میں فرقہ وارانہ فسادات میں ہلاک ہونے والے جاٹ طبقہ کے افراد کا انتقام لیا جانا چاہئے۔ انہوں نے بی جے پی کو ووٹ دینے کی اپیل کرتے ہوئے اشتعال انگیز تقریر کی تھی۔ امیتشاہ نے اس کیس میں گرفتاری روکنے عدالت سے حکم التواء کا مطالبہ کیا ہے۔ اسی دوران امیت شاہ الیکشن کمیشن سے کہا کہ وہ اپنی نوٹس پر نظرثانی کریں۔

نکسلائٹس حملے میں دو کوبرا کمانڈوز ہلاک
رائے پور ۔ 9 ۔ اپریل (سیاست ڈاٹ کام) چھتیس گڑھ جہاں انتخابات منعقد شدنی ہیں، نکسلائٹس نے حملہ کر کے سی آر پی ایف کی کوبرا بٹالین کے دو کمانڈوس کو ہلاک اور مزید پانچ کو گھات لگاکر کئے گئے حملہ میں زخمی کردیا ۔ دریں اثناء بستر کے آئی جی ارون دیو گوتم نے کہا کہ حملہ صبح 10.30 بجے کیا گیا ، جب نکسلائٹس نے کمانڈوز کی گشتی پارٹی پر گھات لگاکر حملہ کیا ۔ دوسرا واقعہ بیجا پور میں ہوا جہاں نکسلائٹس نے ایک طاقتور دھماکہ کیا جس میں سی آر پی ایف کے دو جوان زخمی ہوگئے۔

TOPPOPULARRECENT