Wednesday , May 23 2018
Home / Top Stories / نقدی ‘ انتخابات کی وجہ سے کرناٹک چلی گئی

نقدی ‘ انتخابات کی وجہ سے کرناٹک چلی گئی

چیف منسٹر اے پی چندرا بابو نائیڈو کا طنز ۔ مرکز پر شدید تنقید
امراوتی 21 اپریل ( پی ٹی آئی ) چیف منسٹر آندھرا پردیش این چندرا بابو نائیڈو نے ملک کے کئی علاقوں میں اے ٹی ایم مشینوں میں رقومات دستیاب نہ رہنے پر مرکز کی بی جے پی زیر قیادت حکومت کو تنقید کا نشانہ بنایا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ نقدی کی ایسی قلت کا ملک کے عوام کو تاریخ میں کبھی سامنا کرنا نہیں پڑا تھا ۔ انہوں نے مزاحیہ انداز اختیار کرتے ہوئے کہا کہ ہوسکتا ہے کہ 12 مئی کو کرناٹک میں ہونے والے انتخابات کے بعد نقدی کا یہ بحران ختم بھی ہوجائے ۔ نائیڈو نے ریمارک کیا کہ وہاں ( کرناٹک میں ) انتخابات ہو رہے ہیں تو پیسہ وہاں چلا گیا ہے ۔ کرناٹک انتخابات کے بعد یہ رقومات واپس آ جائیں گی ۔ خواتین سیلف ہیلپ گروپس کی قائدین کے ساتھ بات چیت کرتے ہوئے نائیڈو نے ان سے سوال کیا تھا کہ آیا انہوں نے کبھی نقدی کی ایسی قلت کا کبھی سامنا کیا تھا ؟ ۔ کہیں بھی اے ٹی ایم میں نقدی نہیں ہے ۔ اس کیلئے کون ذمہ دار ہیں ؟ ۔ انہوں نے کہا کہ واضح طور پر مرکزی قائدین ذمہ دار ہیں۔ اس دوران ریاست میں کانگریس کی جانب سے نقدی کی قلت اور اے ٹی ایم مشینوں کے خالی ہوجانے کے خلاف ریلیاں منظم کی گئیں۔ پردیش کانگریس صدر رگھوویرا ریڈی نے وجئے واڑہ میں احتجاج کی قیادت کی ۔ انہوں نے کہا کہ نریندر مودی حکومت نے عوام کو بینکنگ نظام سے دور کر دیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ نوٹ بندی کو دیڑھ سال ہوگیا ہے لیکن اب تک بینکوں میں رقومات دستیاب نہیں ہیں۔

TOPPOPULARRECENT