نماز، معراج النبی ؐ کا عظیم تحفہ

سدی پیٹ۔ 18 مئی (سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) سدی پیٹ فاؤنڈیشن کی جانب سے بروز ہفتہ ایک جلسہ بعنوان ’’عظمت قرآن و فضائل معراج ‘‘، مسجد صوفیہ میں منعقد کیا گیا جس میں مہمان خصوصی مولانا شفیع نقشبندی کا خطاب ہوا۔ مولانا نے معراج کے واقعہ کی تفصیل بتاتے ہوئے کہا کہ مکہ مکرمہ کے اندر بنو ہاشم کا جو خاندان ہے، وہ بہت ہی بڑا تاجر خاندان تھا اور اس خ

سدی پیٹ۔ 18 مئی (سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) سدی پیٹ فاؤنڈیشن کی جانب سے بروز ہفتہ ایک جلسہ بعنوان ’’عظمت قرآن و فضائل معراج ‘‘، مسجد صوفیہ میں منعقد کیا گیا جس میں مہمان خصوصی مولانا شفیع نقشبندی کا خطاب ہوا۔ مولانا نے معراج کے واقعہ کی تفصیل بتاتے ہوئے کہا کہ مکہ مکرمہ کے اندر بنو ہاشم کا جو خاندان ہے، وہ بہت ہی بڑا تاجر خاندان تھا اور اس خاندان کے بہت ہی مشہور تاجر حضرت محمد صلی اللہ علیہ وسلم تھے۔ اسی لئے اللہ کے رسولؐ کا لقب تاجر امین صادق تھا، لیکن جب اللہ نے آپ کو نبوت سے سرفراز فرمایا تو وہی مکہ کے لوگ آپ کے دشمن ہوگئے اور آپ کو تکالیف میں مبتلا کیا پھر تقریباً تین سال کے عرصہ تک آپ کو مکہ سے باہر کردیا گیا پھر جس سال یہ معراج کا واقعہ ہوا، وہ سال عام الحزن (غم کا سال) تھا۔ اللہ کے رسولؐ کے صاحبزادہ کی وفات،حضرت خدیجہ رضی اللہ عنہا کی وفات اور طائف میں آپ کو لہولہان کیا گیا۔ آپؐ اس غم میں مبتلا تھے کہ اللہ نے حضورؐ کو تسلی دینے کیلئے اپنے پاس بلانے کا ارادہ کیا۔ اللہ کے حکم سے حضرت جبرئیل علیہ السلام ، حضورؐ کو لے کر چلے، جب مسجد اقصیٰ پہونچے تو اللہ کے نبیؐ نے سارے انبیاء کی امامت فرمائی۔ اسی وقت آپ کو امام الانبیا کا لقب ملا اور آپؐ جب اللہ کے پاس پہونچے تو اللہ نے آپ ؐکو تسلی دی اور نمازکا تحفہ بھی عطا فرمایا۔ نماز کا تحفہ اس اُمت کی خصوصیت ہے، ایسا تحفہ پچھلی کسی امت کو نہیں ملا، پھر مولانا کی رقت آمیز دعا پر جلسہ کا اختتام عمل میں آیا۔

TOPPOPULARRECENT