Tuesday , January 16 2018
Home / اضلاع کی خبریں / نماز ہر مسلمان کیلئے افضل ترین عبادت

نماز ہر مسلمان کیلئے افضل ترین عبادت

یلاریڈی۔ /17جون، ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز)یلاریڈی مستقر پر حضرت سید شاہ عباس شاہ ولی ؒ کے عرس مبارک کے موقع پر منعقدہ جلسہ عظمت اولیاء اللہ ؒ بارش کے پیش نظر اردو گھر پر عمل میں آیا۔ اس موقع پر مولانا محمد معصوم احمد نقشبندی امام و خطیب مدینہ مسجد کاماریڈی نے اپنے بیان میں اولیاء کرام پر روشنی ڈالی اور کہا کہ اللہ کے ولی کو نہ کوئی خوف ہوتا

یلاریڈی۔ /17جون، ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز)یلاریڈی مستقر پر حضرت سید شاہ عباس شاہ ولی ؒ کے عرس مبارک کے موقع پر منعقدہ جلسہ عظمت اولیاء اللہ ؒ بارش کے پیش نظر اردو گھر پر عمل میں آیا۔ اس موقع پر مولانا محمد معصوم احمد نقشبندی امام و خطیب مدینہ مسجد کاماریڈی نے اپنے بیان میں اولیاء کرام پر روشنی ڈالی اور کہا کہ اللہ کے ولی کو نہ کوئی خوف ہوتا ہے اور نہ کوئی غم ہوتا ہے۔ اولیاء کرام اپنی عبادتوں سے اللہ کے قریب ہوتے ہیں اور ان ولیوں کے جو قریب رہا اس نے اللہ سے قربت کا راستہ تلاش کرلیا۔ مولانا سید شاہ عزیز اللہ قادری شیخ المعقولات جامعہ نظامیہ حیدرآباد نے اپنے فکر انگیز خطاب میں مسلمانوں کو اولیاء اللہ کی تعلیمات پر عمل کرنے کا مشورہ دیا۔ آج کا مسلمان عملی کردار سے کافی دور ہے۔ عمل کے بناء کوئی کامیابی ممکن نہیں ۔ نماز ہر مسلمان کیلئے افضل ترین عبادت ہے اس سے غفلت اور سستی اللہ کے غیض و غضب کا باعث ہوسکتا ہے۔ پنج وقتہ نماز ہی مسلمانوں کی کامیابی کا زینہ بن سکتی ہے۔ عبادات کو ارماں سمجھنا دوزخ کے قریب ہونے کے سوا کچھ نہیں۔ اولیاء کرام جیسا زہد و تقویٰ بھی مسلمانوں کو آخرت کیلئے اپنانا ہوگا۔ دنیا تو فانی ہے چند روزہ زندگی کیلئے پریشان ہونے کے بجائے قبر کی مستقل زندگی جہاں ہم اپنی مرضی سے خوش رہ سکتے ہیں سنوارنے کی ضرورت ہے۔ یہ چند روزہ زندگی اللہ کے احکام بجالانے کیلئے ہے اور اس کی بندگی کیلئے ہی عطاء کی گئی ہے۔ جنت میں کسی عبادت کی ضرورت نہیں ہے مومن بندہ جنت میں اپنی مرضی جیسی خوشگوار زندگی گذار سکتا ہے۔ شرط یہ ہے کہ دنیاوی زندگی کو اللہ اور اس کے رسول ؐ کے بتائی ہوئی راہ پر چلیں۔ اسی لئے اولیائے کرام نے دنیاوی زندگی کی پرواہ نہیں کی اور اس سے محبت نہیں کی صرف آخرت کو سنوارنے کی خاطر اللہ اور اس کے رسول ؐ کی خوشنودی کی خاطر مکمل زندگی لگادی اور اللہ کے قریب ترین بندے بن گئے تب ہی تو اللہ نے ولیوں کی عظمت اپنی کتاب قرآن میں بیان کی۔ مولانا سید شاہ عزیز اللہ قادری نے عبادات کے ساتھ عمل پر بھی درس آمیز خطاب کیا۔ا نہوں نے کہا کہ عمل کے بغیر مسلمان کی شناخت ممکن نہیں۔ نماز کو ہر حال میں ادا کرتے رہنے کی تاکید کی۔ انہوں نے حدیث شریف بتاتے ہوئے کہا کہ قبر کے اندر والے عذاب اور چیخ و پکار کو اگر زندہ لوگوں کو بتلایا جاتا تو کوئی اپنے رشتہ دار بھائی کو زمین میں دفن کرنا چھوڑ دیتا۔

تو اتنا سخت ترین عذاب قبر میں ہوگا۔ جو اسلامی تعلیمات کو ترک کرکے نماز جیسی قیمتی عبادت کو چھوڑا اس کیلئے عذاب بدترین ہوگا۔ انہوں نے نمازوں کو قائم کرتے ہوئے اولیاء کرام کے آستانوں سے وابستگی رکھنے کو کہا۔ اولیاء اللہ سے وابستہ ہونا ہی اللہ سے قریب ہونے کی علامت ہے۔ اولیاء اللہ عبادات کی کثرت کے ساتھ تقویٰی میں اعلیٰ مقام رکھتے تھے اس لئے انہیں بلند درجہ عطاء کیا گیا۔ اللہ سے محبت کرنے والوں سے محبت کرنا، اللہ کو خوش کرنے کے برابر ہے کیونکہ ہر ولی سے یہی درس ملتا ہے کہ اللہ سے ڈرو، اس کی عبادت کرو، تکبر ترک کرو، عبادت کے ساتھ عمل بھی کرنا ضروری بتایا۔ اس مبارک موقع پر بارگاہ رسالتؐ میں خواجہ قطب الدین صابر، اعجاز احمد مسرور، راشدالقادری، مقبول احمد خان انواری، سید اعجاز بودھن نے خوشالحالی کے ساتھ نعت شریف سنانے کی سعادت حاصل کی۔ جلسہ رات دیر تک چلتا رہا۔ جناب اعجاز احمد مسرور کے سلام کے بعد اختتام کو پہنچا۔ جناب محمد معصوم احمد نقشبندی نے رقت انگیز دعاء کی۔ جلسہ کی نظامت جناب غلام شبیر علی ساگری نے انجام دی۔ جلسہ میں مسلمانوں کی کثیر تعداد موجود تھی۔

TOPPOPULARRECENT