Wednesday , September 26 2018
Home / ہندوستان / نن کی عصمت ریزی کی تحقیقات سی بی آئی کے سپرد

نن کی عصمت ریزی کی تحقیقات سی بی آئی کے سپرد

مسئلہ کی سنگینی کو ملحوظ رکھتے ہوئے حکومت مغربی بنگال کا فیصلہ : ممتا بنرجی

مسئلہ کی سنگینی کو ملحوظ رکھتے ہوئے حکومت مغربی بنگال کا فیصلہ : ممتا بنرجی
کولکتہ 18 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) مغربی بنگال کی چیف منسٹر ممتا بنرجی نے کہا ہے کہ رانا گھاٹ میں عیسائی راہبہ (نن) کی اجتماعی عصمت ریزی کیس کی سنگینی اور حساسیت کو ملحوظ رکھتے ہوئے ریاستی حکومت نے اس واقعہ کی تحقیقات کو سی بی آئی کے سپرد کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ اُنھوں نے کہاکہ اس کیس کی تحقیقات میں ان کی حکومت کی جانب سے سی بی آئی کو ممکنہ تعاون و مدد فراہم کی جائے گی۔ چیف منسٹر ممتا بنرجی نے اپنے فیس بُک پیج پر لکھا کہ ’’اس کیس کی سنگینی اور حساسیت کے علاوہ اس حقیقت پر یہ واقعہ سرحد کے بہت قریبی علاقہ میں پیش آیا ہے۔ میں نے اس کی تحقیقات سی بی آئی کے سپرد کرنے کا فیصلہ کیا ہے‘‘۔ ممتا بنرجی نے کہاکہ ’’رانا گھاٹ واقعہ جو 14 مارچ کو پیش آیا ایک انتہائی سنگین معاملہ ہے۔ پولیس انتظامیہ کو ہدایت کی گئی ہے کہ خاطیوں کو پکڑنے کے لئے تیز رفتار کارروائی کی جائے اور وہ (پولیس) ممکنہ حد تک بہتر مساعی کررہے ہیں‘‘۔ واضح رہے کہ ناڈیہ کے رانا گھاٹ سب ڈیویژن کے تحت گنگنا پور میں ڈاکوؤں کی ایک ٹولی نے ایک کانوینٹ اسکول کی 71 سالہ سسٹر سوپیرئیر کی اجتماعی عصمت ریزی کی تھی۔ اس ضمن میں تاحال 15 افراد کو حراست میں لیا گیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT