Monday , November 20 2017
Home / Top Stories / نواز شریف کو پاکستان میں کشمیر کے انضمام کا انتظار، وزیراعظم مودی ’خاموش‘

نواز شریف کو پاکستان میں کشمیر کے انضمام کا انتظار، وزیراعظم مودی ’خاموش‘

مظفرآباد ؍ نئی دہلی (سیاست ڈاٹ کام) پاکستانیوں کو اُس دن کا انتظار ہے جب جموں و کشمیر پاکستان کا حصہ بن جائے، پاکستانی وزیراعظم نواز شریف نے جمعہ کو یہ اعلان کیا۔ اس کے برخلاف وزیراعظم ہند نریندر مودی نے سلگتے موضوعات پر بدستور خاموشی اختیار کررکھی ہے جس پر انھیں خاص طور پر اپوزیشن کانگریس نے آج کڑی تنقیدوں کا نشانہ بنایا۔ لندن میں ماہ مئی کی گئی اوپن ہارٹ سرجری کے بعد وطن واپسی پر اپنے اولین خطابِ عام میں نواز شریف نے پاکستان میں موجود کشمیریوں پر زور دیا کہ ہندوستان کے زیرقبضہ کشمیر میں رہنے والوں کو فراموش نہ کریں جو اپنی جدوجہد آزادی میں اپنی جانیں قربان کررہے ہیں۔ اخبار ’ڈان‘ نے نواز شریف کے حوالے سے کہا: ’’اُن (کشمیریوں) کی تحریک آزادی کو نہیں روکا جاسکتا اور یہ کامیاب ہوکر رہے گی۔ آپ کو پتہ ہے کہ انھیں کس طرح زدوکوب اور ہلاک کیا جارہا ہے۔ ہماری دعائیں اُن کے ساتھ ہیں اور ہم اُس دن کے منتظر ہیں جب کشمیر بھی پاکستان کا حصہ بن جائے۔‘‘ نواز شریف کا اس خطاب کا پس منظر یہ ہے کہ پاکستان مسلم لیگ۔ نواز نے ’’آزاد جموں و کشمیر‘‘ اسمبلی کیلئے گزشتہ روز منعقدہ انتخابات میں زبردست کامیابی حاصل کرلی ہے۔ پی ایم ایل (این) پاکستانی کشمیر میں اگلی حکومت تشکیل دینے تیار ہے، جس کا سرکاری نام ’’آزاد جموں و کشمیر‘‘ ہے۔نواز شریف نے کہا کہ وہ دن دور نہیں جب جموں و کشمیر (بھی) پاکستان (کا حصہ) بن جائے گا، نیز یہ کہ ہندوستانی کشمیر والوں کو ’’انسانی حقوق کی بدترین خلاف ورزیوں‘‘ کا سامنا ہورہا ہے۔ نئی دہلی میں کانگریس نے آج وزیراعظم مودی کو نشانہ بنایا کہ وہ کشمیر میں جاری بدامنی پر ’’خاموش‘‘ ہیں۔ کانگریس ترجمان کپل سبل نے کہا کہ وزیراعظم آج گورکھپور پہنچے اور بہت باتیں کئے۔ لیکن کشمیر کا ذکر نہیں کیا، حالانکہ وہ عام طور پر ہر موضوع پر بولتے ہیں۔ آج کشمیر کے عوام منتظر ہیں کہ وزیراعظم ہند کوئی بیان دیںتاکہ معلوم ہوکہ انھیں جموں و کشمیر کے تعلق سے فکر ہے اور وہ اُن (کشمیریوں) کے زخموں پر مرہم لگا رہے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT