Tuesday , April 24 2018
Home / Top Stories / نوجوانوں میں شدت پسندی کا بڑھتا رجحان دنیا کیلئے چیلنج

نوجوانوں میں شدت پسندی کا بڑھتا رجحان دنیا کیلئے چیلنج

بعض ممالک کی دہشت گردوں کو محفوظ پناہ گاہوں کی فراہمی عالمی سطح پر دہشت گردی کو فروغ دینے کا باعث: راجناتھ سنگھ
گڑگاؤں 15 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) مرکزی وزیرداخلہ راجناتھ سنگھ نے آج کہاکہ لوگوں میں خاص کر نوجوانوں میں شدت پسندی کا بڑھتا ہوا رجحان پوری دنیا کے لئے سب سے بڑا چیلنج بن گیا ہے۔ انسداد دہشت گردی کے موضوع پر منعقد ’’چیجنگ کاؤنٹر آف گلوبل ٹیررز‘‘ کی چوتھی کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے راجناتھ سنگھ نے بغیر کسی ملک کا نام لئے کہاکہ بعض ممالک دہشت گردوں کو پناہ دینے میں ملوث ہیں جو دہشت گردوں کے لئے محفوظ پناہ گاہ بنا ہوا ہے جہاں اُنھیں ہر طرح کی سہولتیں حاصل ہیں۔ اس کی وجہ سے دہشت گردانہ خطرات میں مزید اضافہ ہوگیا ہے۔ اُنھوں نے کہاکہ عالمی سطح پر کئی ایک ممالک ہیں جنھوں نے دہشت گردی کی شناخت کرتے ہوئے اُس پر قابو پانے اور اُس کے خطرات سے نمٹنے کے لئے اقدامات کئے ہیں۔

مجھے اس بات کی خوشی ہے کہ ہم نے بروقت دہشت گردوں کے کئی ایک ماڈلس کو بے نقاب کردیا ہے جو ہماری سرزمین پر حملہ کرنے کا منصوبہ رکھتے تھے۔ اُنھوں نے کہاکہ دہشت گردوں کو اسپانسر کرنا اُنھیں محفوظ پناہ گاہ فراہم کرنا اس مسئلہ کو مزید تشویشناک بنادیا ہے۔ مسئلہ یہ ہے کہ ایسے معاملات میں اضافہ ہی ہوتا جارہا ہے جو دنیا بھر کے لئے ایک چیلنج بنا ہوا ہے۔ ڈاکٹر سنگھ نے مزید کہاکہ مسئلہ یہ ہے کہ اِن دہشت گردوں کے خلاف کی جانے والی کوئی بھی کارروائی متعلقہ ممالک کے خلاف کارروائی سمجھی جاتی ہے جو بذات خود ایک تشویشناک امر ہے۔ اُنھوں نے کہاکہ انفرادی طور پر مسلم نوجوانوں کا شدت پسندانہ کارروائیاں بھی دنیا کے لئے چیلنج بنا ہوا ہے جو عالمی سطح پر داعش جیسی تنظیموں سے متاثر ہے۔ اُنھوں نے کہاکہ القاعدہ جیسی تنظیمیں جو عرصہ دراز تک دہشت گردی کا چہرہ سمجھا جاتا رہا ہے اور جس کا نیٹ ورک کبھی مشرق وسطیٰ تک محدود تھا اب اُس نے اپنی سرگرمیاں اور اپنے نیٹ ورک جنوبی ایشیاء تک منتقل کردیا ہے۔ مرکزی وزیرداخلہ نے کہاکہ حالیہ عرصہ میں مشرق وسطیٰ، جنوبی ایشیاء اور افریقہ میں ایسے نوجوانوں کے حملے اس بات کا ثبوت ہے کہ دہشت گردی عالمی سطح پر اپنے پاؤں پھیلاتے جارہی ہے۔ اُنھوں نے کہاکہ اہم بات یہ ہے کہ اُن دہشت گردوں کو جرائم کی دنیا میں ایک منظم جرائم بندوق بردار، اسمگلر، منشیات کے کاروبار میں ملوث گروہوں اور حوالہ جیسے متوازی مالیاتی چیانلس اِن دہشت گردوں کو ایک آسان وسائل فراہم کرنے کا ذریعہ بن رہے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT