Thursday , December 13 2018

نوجوانوں کو مختلف شعبوں میں تربیت کیلئے انڈسٹریل ٹریننگ اداروں کا استحکام

آئی ٹی آئی طلبہ کو فراہمی روزگار کی تجویز، این نرسمہا ریڈی وزیرداخلہ تلنگانہ کا بیان
حیدرآباد۔13 نومبر (سیاست نیوز) وزیر داخلہ این نرسمہا ریڈی نے بتایا کہ ریاست میں انڈسٹرئیل ٹریننگ اداروں کو مستحکم کیا جارہا ہے تاکہ نوجوانوں کو مختلف شعبہ جات میں ٹریننگ دی جاسکے۔ وی گنگادھر گوڑ اور دیگر ارکان کے سوال پر قانون ساز کونسل میں جواب دیتے ہوئے وزیر داخلہ نے کہا کہ ریاست میں 65 گورنمنٹ انڈسٹرئیل ٹریننگ انسٹیٹیوٹس ہیں، ان میں سے 11 ادارے ووکیشنل ٹریننگ اِمپلیمنٹیشن پروگرام اسکیم کے تحت کام کررہے ہیں، جس کے لئے ہر ادارہ کو 3.50 کروڑ روپئے کی امداد دی جاتی ہے۔ 30 ادارے پبلک پرائیویٹ پارٹنرشپ کے تحت چل رہے ہیں، ہر ادارے کو 2.5 کروڑ روپئے کی امداد فراہم کی جاتی ہے۔ 9 ادارے مختلف کارپوریٹ گھرانوں کے تحت کام کررہے ہیں اور سی آر ایس فنڈس کے تحت 6.97 کروڑ روپئے جاری کئے گئے ہیں۔ تعلیمی سال 2017-18ء کے دوران آن لائن داخلے انجام دیئے گئے۔ ٹریننگ حاصل کرنے والے امیدواروں اور اسٹاف کے لئے بایومیٹرک حاضری سسٹم متعارف کیا گیا ہے۔ تلنگانہ پبلک سرویس کمیشن کے ذریعہ 247 مخلوعہ ٹیکنیکل جائیدادوں کا اعلامیہ جاری کیا گیا۔ وزیر داخلہ نے بتایا کہ انڈسٹرئیل ٹریننگ اداروں میں مختلف آلات اور مشنری کی خریدی کیلئے 4.39 کروڑ روپئے جاری کئے گئے۔ انہوں نے کہا کہ آئی ٹی آئی کے طلبہ کو روزگار فراہم کرنے کیلئے حکومت ، کیمپس سلیکشن کے اہتمام کا منصوبہ رکھتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ایسے امیدوار جو اپنی ٹریننگ کی تکمیل کے مرحلے میں ہوتے ہیں، ان کیلئے ہر سال کیمپس پلیسمنٹ مہم کا اہتمام کیا جاتا ہے جس میں مختلف خانگی ادارے شرکت کرتے ہوئے طلبہ کی قابلیت کے اعتبار سے انتخاب کرتے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT