Wednesday , November 21 2018
Home / کھیل کی خبریں / نوجوان بولرس کو فرسٹ کلاس کرکٹ میں پسینہ بہانے کی ضرورت

نوجوان بولرس کو فرسٹ کلاس کرکٹ میں پسینہ بہانے کی ضرورت

فاتح ٹیم کے بولنگ کوچ پارس نے بہترین کھیل کے مظاہرہ کیلئے محنت کا مشورہ دیا

ممبئی۔ 6 فروری (سیاست ڈاٹ کام) انڈر 19عالمی کپ کی فاتح ہندوستان کے بالنگ کوچ پارس مہاجری نے کہا ہے کہ جونوان تیز گیند بازوں کو فرسٹ کلاس کرکٹ میں سخت محنت کا مظاہرہ کرتے ہوئے مزید پسینہ بہانے کی ضرورت ہے ،ان کی یہ محنت ان کو آنے والی آگے کے چیلنجیز میں معاون ثابت ہوگی ۔بالنگ کوچ کے مطابق’’ یہ نوجوان کھلاڑی اعلی قسم کی کرکٹ کا مظاہرہ کر رہے ہیں انھوں انڈر 19کی حد تک بہترین کھیل کا مظاہرہ کیا ہے ،ان کے بالنگ کی رفتار بہت اچھی ہے لیکن آپن فرسٹ کلاس کرکٹ میں پیش آنے والے چیلنجیز پر نظر ڈالیں تو آپ کو معلوم ہوگا کہ وہاں کی بیٹنگ کتنی اعلی قسم کی ہے ان کے لئے یہ چیزیں ابھی نئی ہونگی اور ان کا مقابلہ کرنے کے لئے ان کو تھوڑا وقت لگے گا ،لہذا ان کو فرسٹ کلاس کرکٹ میں سخت پسینہ بہانے کی ضرورت ہے وہاں پر کامیابی اور ناکامی کے تلخ اور شیریں تجربات ان کو مزید پختہ اور تجربہ کار بنائیں گے ۔انھوں مزید کہا کہ فاسٹ گیند باز ہونے کے لئے صرف یہ کافی نہیں ہے کہ گیند باز اپنی گیند کو کتنی تیزی سے ڈال رہا ہے بلکہ اس سے زیادہ ضرورت اس بات کی ہے کہ اس کے اندر بال ڈالنے کی سمجھ ہو ،وہ بالنگ کی کنڈیشن کو سمجھتا ہوبال کب اور کہاں ڈالنا ہے اس سے واقف ہو اور اپنے جسم پر قابو کیسے پایا جایا اس کے فن سے واقف ہو ۔بلانگ کوچ نے کہا کہ ان نوجوان کھلاڑیوں کے لئے ابھی اعلی کرکٹ کے کھیلنے کی پیشین گوئی کرنا جلد بازی ہوگی آئی پی ایل میں ان کی شمولیت پر پوچھے گئے سوال کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ یہ لڑکے بہت ہی پختہ ہیں، تاہم آئی پی ایل نیلامی ہمارے لئے ایک چیلنج بھرا مرحلہ تھا، لیکن پھر بھی جب وہ میدان میں اُترے تو اپنی صلاحیت کا بھرپور مظاہرہ کیا۔ ہاں آئی پی ایل ایک بڑا ٹورنمنٹ ہے اور اس کیلئے ہر کوئی کھیلنا چاہتا ہے۔ یہ صرف دولت اور شہرت کا کھیل نہیں ہے۔ یہ نوجوان کھلاڑی اس بات سے آگاہ ہیں کہ اس میں ان کو دُنیا کے بڑے بڑے بلے بازوں و گیند بازوں کے شانہ بشانہ کھیلنے کا تجربہ حاصل ہوتا ہے۔ ساتھ ہی دنیا کے ماہر کوچوں کا مفید مشورہ بھی حاصل کرسکتے ہیں۔ بولنگ کوچ نے مزید کہا کہ فائنل میں آسٹریلیا جیسی ٹیم کو یکطرفہ شکست دینے والی ٹیم میں کملیش ناگر کوٹی و شیوم ماوی جیسے باصلاحیت گیند باز ہیں جو مسلسل 140 کے اوپر گیند پھینک سکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ تیز گیند ڈالنے کیساتھ ساتھ ایک گیند باز کیلئے ضروری ہے کہ گیند کی لینتھ پر بھی پکڑ بنائے رکھے۔

TOPPOPULARRECENT