Friday , December 15 2017
Home / جرائم و حادثات / نورخان بازار قتل کیس کا ملزم منسوبہ الزامات سے بری

نورخان بازار قتل کیس کا ملزم منسوبہ الزامات سے بری

حیدرآباد ۔  14 ستمبر  (سیاست  نیوز) نامپلی کریمنل کورٹ کے فرسٹ ایڈیشنل میٹرو پولیٹن سیشن جج نے بیوی اور بھانجی کے بہیمانہ قتل کے ملزم شوہر سید علی اصالت کو بری کرلیا۔ ذرائع کے بموجب 11 جون 2014 ء کو 45 سالہ ثمینہ فاطمہ اور ان کی بھانجی دانیا انم کا نورخاں بازار میں واقع ایک اپارٹمنٹ میں نامعلوم افراد نے بہیمانہ طور پر قتل کردیا تھا۔میر چوک پولیس نے اس سلسلہ میں قتل کا مقدمہ درج کرتے ہوئے تحقیقات کا آغاز کیا اور شبہ کی بنیاد پر ثمینہ فاطمہ کے شوہر سید علی اصالت کے ایک ساتھی علی کو حراست میں لے کر تفتیش کی جس میں سنسنی خیز انکشافات ہوئے تھے ۔ پولیس نے دعویٰ کیا کہ علی اصالت کی مبینہ ایماء پر علی نے ثمینہ فاطمہ اور ان کی بھانجی دانیا انم کا گلہ کاٹ کر قتل کردیا تھا۔ پولیس نے دبئی سے واپسی پر اصالت کو بھی گرفتار کر کے عدالتی تحویل میں دیدیا تھا۔ انسپکٹر میر چوک مسٹر وی یادگیری ریڈی نے بتایا کہ ٹھوس شواہد کی عدم موجودگی کے باعث عدالت نے انہیں بری کردیا۔

TOPPOPULARRECENT