Wednesday , August 22 2018
Home / شہر کی خبریں / نومولود کو بلی دینے والا جوڑا گرفتار ، جادوگروں کے مشوروں پر معصوم کا سر تن سے جدا کردیا

نومولود کو بلی دینے والا جوڑا گرفتار ، جادوگروں کے مشوروں پر معصوم کا سر تن سے جدا کردیا

حیدرآباد۔15 فروری ( سیاست نیوز ) ریاست بھر میں سنسنی پھیلانے والے چلکا نگر نومولود کیس کو رچہ کنڈہ پولیس نے حل کرلیا ہے ۔ یاد رہے کہ یکم فروری کے دن ایک مکان کی چھت پر نومولود کا سر دستیاب ہوا تھا ۔ جبکہ گذشتہ رات چاند گہن کے سبب اس نومولود کو بلی دینے کا شبہ ظاہر کیا جارہا تھا ۔ رچہ کنڈہ پولیس نے اس کیس کی یکسوئی کیلئے اپنی تمام تر کوششوں اور طاقت کو جھونک دیا تھا ۔ باوجود اس کے گمراہی اور غلط بیانی کے سبب اس کیس میں سراغ دستیاب ہونے میں تاخیر ہوئی ۔ کمشنر پولیس رچہ کنڈہ نے آج ایک پریس کانفرنس کے دوران گرفتار افراد کو میڈیا کے روبرو پیش کیا اور بتایا کہ اس کیس میں اصل سازش و سرغنہ شکایت گذارشخص ہی نکلا جس نے بیوی کی صحت اور پریشانیوں کے اختتام کیلئے انتہائی درجہ کا غیر انسانی عمل کیا ۔ انہوں نے بتایا کہ پولیس بھی اس نومولود کا سر دستیاب ہونے کے بعد کافی حیران تھی ۔ چونکہ آج کے دور میں بھی اس طرح کی حرکتیں جاری ہیں ۔ پولیس نے 40 سالہ پی راج شیکھر گوڑ اور اس کی بیوی سری لتا 35 سالہ کو گرفتار کرلیا ۔اس کیس میں جملہ 6 افراد کی گرفتاری بتائی جارہی ہے ۔ چاند گہن کے دن نومولود پر چاند کا سایہ پڑھنے کے وجہ اس کی بلی دینے سے پریشانیوں اور بیماریوں کا ختم ہونے کا جادوگروں نے راج شیکھر کو مشورہ دیا تھا اور اس دن میاں بیوی نے برہنہ پوجاکرنے کے بعد نومولود کی بلی دے دی اور سر کو چھت پر رکھ دیا ۔ جبکہ اس 3 ماہ کے نومولود کے دھڑ کو موسی ندی میں پھینک دیا ۔ کمشنر نے بتایا کہ سکندرآباد کے علاقہ بھوئی گوڑہ فٹ پاتھ پر زندگی بسر کرنے والے افراد سے اس نومولود کا سرقہ کیا گیا اور راج شیکھر کے حوالے کیا گیا ۔ کیاب ڈرائیور راج شیکھر اس معاملہ میں شکایت گذار تھا جس نے پولیس کو غلط بیانات و اطلاعات فراہم کرتے ہوئے گمراہ کیا ۔ اس نے اس کی دشمنی پوری کرنے کیلئے بھی پولیس کو گمراہ کرتے ہوئے استعمال کررہا تھا ۔ کمشنر پولیس نے بتایا کہ اس کیس میں پولیس نے اپنی تمام توجہ مرکوز کرتے ہوئے ہر زاویہ سے رات دن اقدامات کئے ۔ تقریباً 120 موبائیل فونوں کے سی ڈی آر ڈاٹا حاصل کیا گیا جبکہ 54 سیل فون ٹاور کے لوکیشن کی جانچ کی گئی اور 45 مشتبہ افراد کو حراست میں لیتے ہوئے ان سے پوچھ تاچھ کی گئی اور 100 سے زائد سی سی ٹی وی فوٹیج حاصل کئے گئے۔

TOPPOPULARRECENT