Wednesday , December 13 2017
Home / Top Stories / نوٹوں کی تنسیخ کامشیر بنیادی معاشی معلومات سے ناواقف

نوٹوں کی تنسیخ کامشیر بنیادی معاشی معلومات سے ناواقف

سابق مرکزی وزیر فینانس چدمبرم کا بیان ، نوٹوں کی تنسیخ سے دہشت گردی اور نکسل ازم پر قابو: راج ناتھ سنگھ

حکومت پر ممتا بنرجی اور اروند کجریوال کی تنقید

ممبئی۔ 20 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) سابق مرکزی وزیر فینانس پی چدمبرم نے بڑی مالیت کے نوٹوں کی تنسیخ کو ایک ’’تاریخی سانحہ‘‘ اور ’’غریب دشمن‘‘ اقدام قرار دیا۔ انہوں نے کہا کہ جس شخص نے بھی یہ نظریہ پیش کیا ہے کہ وہ معاشیات میں ایسا معلوم ہوتا ہے کہ گریجویشن بھی مکمل نہیں کرپایا تھا۔ وہ ممبئی یونیورسٹی کی ایک تقریب سے خطاب کررہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ اعلیٰ کرنسی نوٹوں کی تنسیخ کوئی اصلاحی اقدام نہیں بلکہ تاریخی سانحہ اور غریب دشمن اقدام ہے جس کی وجہ سے لاکھوں عوام پریشان اور مصائب کا شکار ہوگئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مودی حکومت نے یہ وہم پیدا کیا ہے کہ تمام کالادھن باہر آجائے گا، تاہم ہنوز ایسا نہیں ہوسکا۔ دریں اثناء مرکزی وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ نے ہردوئی میں ایک ’’پریورتن ریالی جلسہ عام‘‘ سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ مودی کے اعلیٰ مالیتی کرنسی نوٹوں کی تنسیخ کے اقدام سے دہشت گردی اور نکسل ازم پر قابو پانے میں مدد ملی ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ اقدام نہ صرف مٹھی بھر عوام کیلئے جو اپنے آپ کو پورے ملک کا مالک سمجھتے تھے، کیا گیا ہے، اور کرپشن کی کوئی گنجائش باقی نہیں رکھی گئی ہے۔ کولکتہ سے موصولہ اطلاع کے بموجب ترنمول کانگریس کی سربراہ و چیف منسٹر مغربی بنگال ممتا بنرجی نے نریندر مودی حکومت پر الزام عائد کیا کہ وہ ’’انتقامی سیاست‘‘ کررہی ہے۔

ٹی ایم سی کے پارلیمانی پارٹی قائد برائے لوک سبھا سدیپ بنڈو اپادھیائے کو سی بی آئی کی جانب سے طلب کرنے کے بعد انہوں نے ردعمل ظاہر کرتے ہوئے انتقامی سیاست کا الزام عائد کیا۔ انہوں نے کہا کہ معلنہ نئے قواعد روزانہ فیصلوں کی تبدیلی کا مطلب یہ ہے کہ حکومت غیرمستحکم ہے۔ دریں اثناء بنڈو اپادھیائے نے کہا کہ انہیں سی بی آئی سے تین ٹیلی فون کال وصول ہوئے ہیں۔ میں نے ان کے جواب میں سی بی آئی کو ٹیلی فون کیا تھا جس پر انہوں نے مجھے اپنے دفتر طلب کرلیا۔ بی جے پی نے ترنمول کانگریس کے انتقامی سیاست کے الزام کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ آخر ترنمول کانگریس سی بی آئی کی تحقیقات سے خوف زدہ کیوں ہے۔ اس میں کوئی غلطی نہیں ہے۔ ترنمول کانگریس پر بی جے پی نے زور دیا کہ وہ سی بی آئی کے ساتھ تعاون کرے۔ دریں اثناء حکومت بہار نے بینکوں پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ انہوں نے بہار کے دیہی علاقوں میں اپنی شاخیں قائم نہیں کی ہیں۔ ممبئی سے موصولہ اطلاع کے بموجب بامبے ہائیکورٹ نے آج حکومت ِ مہاراشٹرا سے ایک درخواست مفادِ عامہ کی بنیاد پر جواب طلب کیا کہ احتجاجی جلوسوں (مورچوں) کو قانونی کیوں نہ قرار دیا جائے جو نوٹوں کی تنسیخ کے خلاف بطور احتجاج نکالے جارہے ہیں۔ حکومت ِ مہاراشٹرا نے ٹریفک جام اور دیگر مشکلات کی بنیاد پر نوٹوں کی تنسیخ کے خلاف احتجاجی جلوسوں پر امتناع عائد کردیا ہے۔

دریں اثناء چیف منسٹر دہلی اروند کجریوال نے مودی حکومت پر ایک بار پھر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ وزیراعظم کو اپوزیشن کو سی بی آئی استعمال کرتے ہوئے دھمکانا بند کردینا چاہئے کیونکہ اپوزیشن پارٹیاں نوٹوں کی تنسیخ کے خلاف احتجاج کررہی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہر شخص راہول گاندھی نہیں ہے ۔ممتا بنرجی نے اروند کجریوال سے اظہار تشکر کیا کہ انہوں نے مرکز کی جانب سے ترنمول کانگریس کو ہراساں کرنے پر اس کی تائید کی ہے۔ سینئر کانگریس قائد سابق مرکزی وزیر فینانس پی چدمبرم نے کہا کہ نیا جی ڈی پی سیریز جو اجتماعی قدر پر مبنی ہے، ظاہر کرتا ہے کہ 7% تا 7.5% شرح ترقی ہوئی ہے، یہ صرف اعداد و شمار کا واہمہ ہے۔ درحقیقت شرح ترقی صرف 5 تا 5.5 فیصد ہے۔ اعداد و شمار ناقص ہیں۔ جن کی بناء پر اعلیٰ تر جی ڈی پی کا دعویٰ کیا جارہا ہے۔ وہ ممبئی یونیورسٹی کے ایک جلسہ سے خطاب کررہے تھے۔ مثال دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ آر بی آئی کے سابق گورنر رگھو رام راجن نے نشاندہی کی تھی کہ برآمدات ، درآمدات منہا کرنے کے بعد جی ڈی پی کا حصہ ہوتے ہیں ۔ ہم سب کو جان لینا چاہئے کہ مالی سال 2015-16ء میں برآمدات ، مالی سال 2014-15 ء کی بہ نسبت کم تھے۔

TOPPOPULARRECENT