Thursday , November 23 2017
Home / شہر کی خبریں / نوٹ بندی ‘سوچ سمجھ سے عاری فیصلہ ‘ یچوری

نوٹ بندی ‘سوچ سمجھ سے عاری فیصلہ ‘ یچوری

کارپوریٹس کا قرض معاف کرنے پر تنقید۔ سی پی ایم جنرل سکریٹری کا بیان
حیدرآباد 27 نومبر ( پی ٹی آئی ) یہ الزام عائد کرتے ہوئے بڑے کرنسی نوٹوں کا چلن بند کرنے کا فیصلہ بلا سوچے سمجھے کیا گیا ہے سی پی ایم کے جنرل سکریٹری سیتارام یچوری نے آج کہا کہ اس فیصلے سے ملک کے عوام کو زبردست مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے ۔ یچوری نے سی پی ایم کی تلنگانہ یونٹ کی جانب سے ملک میں پچھڑے طبقات کے مسائل کو اجاگر کرنے منعقد کی جا رہی پد یاترا میں حصہ لیا ۔ انہوں نے ادعا کیا کہ کرنسی بندی کی وجہ سے جو مشکلات پیش آ رہی ہیں اس کے نتیجہ میں 75 افراد اپنی جانیں گنوا بیٹھے ہیں۔ یہ الزام عائد کرتے ہوئے کہ متبادل کرنسی نوٹس ابھی بازار میں نہیں آئے ہیں انہوں نے ادعا کیا کہ آر بی آئی نے کہا ہے کہ نئے نوٹ مارکٹ میں آنے کیلئے 175 دن درکار ہونگے ۔ انہوںنے کہا کہ بی جے پی نے سابق وزیر اعظم منموہن سنگھ کو ’ مون موہن سنگھ ‘ قرار دیا تھا تاہم اب خود نریندر مودی پارلیمنٹ میں بات نہیں کر رہے ہیں بلکہ بیرون ایوان اظہار خیال کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مودی نے 2014 میں کہا تھا کہ 90 فیصد کالا دھن بیرون ملک ہے اور اس رقم کو واپس لاتے ہوئے ہر شہری کے اکاؤنٹ میں 15 لاکھ روپئے جمع کروائے جائیں گے لیکن ایسا نہیں ہوا ۔ انہوں نے کہا کہ این ڈی اے حکومت نے کارپوریٹس کے 1.12 لاکھ کروڑ روپئے کے قرض معاف کردئے لیکن کسانوں کے 75,000 کروڑ کے قرض معاف نہیںکئے جا رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ 2000 روپئے کے نئے کرنسی نوٹوں سے کرپشن میں مزید اضافہ ہوگا ۔ انہوں نے کہا کہ کرپشن کو ختم کرنے خصوصی قانون تیار کرنے کی ضرورت ہے ۔

TOPPOPULARRECENT