Tuesday , November 21 2017
Home / شہر کی خبریں / نوٹ بندی کے بعد ترکاری و دیگر اشیاء سستی

نوٹ بندی کے بعد ترکاری و دیگر اشیاء سستی

کسان مجبور ، ترکاری فروش کارڈ سے ادائیگی قبول کرنے تیار نہیں
حیدرآباد۔25ڈسمبر(سیاست نیوز) ترکاری و دیگر اشیاء کی قیمتوں میں گذشتہ ایک ماہ کے دوران آئی کمی کے متعلق بتایا جاتا ہے کہ ملک میں کرنسی کی تنسیخ کے فیصلہ کے بعد کسان اپنی فصلیں سستی فروخت کرنے پر مجبور ہیں کیونکہ ان کی یہ فصلیں طویل مدت تک ذخیرہ نہیں کی جا سکتیں اسی لئے انہیں جلد فصلوں کی فروخت کو یقینی بنانا پڑ رہا ہے ۔ترکاری کی قیمتوں میں ریکارڈ کی جانے والی گراوٹ کے متعلق کہا جا رہا ہے کہ ترکاری کا ذخیرہ ممکن نہیں ہے اسی ئے اس کی قیمت میں تیزی سے گراوٹ آرہی ہے لیکن جن اشیائے ضروریہ کا ذخیرہ ممکن ہے اس میں کوئی گراوٹ ریکارڈ نہیں کی جا رہی ہے۔ملک میں کرنسی تنسیخ کے فیصلہ کے بعد عوام کے ہاتھ میں رقم نہ ہونے کے سبب جلد خراب ہونے والی اشیاء جیسے پھل اور ترکاری کی قیمت میں کمی دیکھی گئی ہے لیکن کسان کا کا کہنا ہے کہ وہ اپنی فصل معمولی نقصان میں فروخت اس لئے کر رہا ہے کیونکہ اگر فروخت نہ کیا گیا تو اسے بھاری نقصان برداشت کرنا پڑ سکتا ہے۔چھوٹے تاجرین و ترکاری فروش فی الحال الکٹرانک ادائیگی یا کارڈ کے ذریعہ ادائیگی قبول کرنے کے موقف میں نہیں ہیں جس کے سبب گاہک سوپر مارکٹ کا رخ کررہے ہیں اور جن کے پاس نقد رقومات موجود ہیں وہی ان ٹھیلہ بنڈیوں اور ترکاری فروشوں سے ترکاری و دیگر اشیائے ضروریہ خرید رہے ہیں جن سے پہلے خریدا کرتے تھے۔دونوں شہروں میں ترکاری و پھلوں کی مارکٹ میں 60فیصد فروخت متاثر ہونے کی اطلاعات موصول ہورہی ہیں جو کہ چھوٹے تاجرین کیلئے انتہائی تکلیف کا سبب بنتی جا رہی ہیں اور انہیں امید ہے کہ آئندہ ماہ حالات میں بہتری آئے گی لیکن ماہرین کی رائے ان کی امیدوں پر پانی پھیرنے لگی ہیں۔

TOPPOPULARRECENT