Monday , November 20 2017
Home / دنیا / نوکریاں بچانے کیلئے برطانوی وزیر ہندوستان پہونچ گئے

نوکریاں بچانے کیلئے برطانوی وزیر ہندوستان پہونچ گئے

لندن۔ 6 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) برطانیہ کے وزیر برائے کاروبار ٹاٹا سٹیل کے برطانیہ میں پلانٹ کی فروخت کے معاملے پر بات کرنے کے لیے ممبئی گئے ہیں، جہاں وہ کاروباری گروپ ٹاٹا سنز کے چیئرمین سائرس مستری سے ملاقات کریں گے۔ کچھ روز قبل ٹاٹا سٹیل نے برطانیہ میں ٹیبلوٹ پورٹ پر اپنے پلانٹ کو فروخت کرنے کا اعلان کیا تھا۔ اْن کا کہنا تھا کہ برطانوی پلانٹ سے انھیں سالانہ تین ارب ڈالر کا نقصان ہو رہا ہے۔برطانیہ کے وزیر کاروبار ساجد جاوید کی انڈین بزنس مین سے ملاقات کا مقصد برطانیہ کی سٹیل مل میں کام کرنے والے 40 ہزار ملازمین کی نوکریوں کو محفوظ بنانا ہے۔وزیر برائے کاروبار ساجد جاوید پر تنقید کی جا رہی ہے کہ اْنھوں نے برطانیہ میں صنعتوں کی بقا کے لیے خاطر خواہ اقدامات نہیں کیے۔ ساجد جاوید نے اْمید ظاہر کی ہے کہ پلانٹ کی فروخت کے بعد بڑے پیمانے پر ملازمتوں میں کمی نہیں کی جائے گی۔برطانیہ میں حزبِ اختلاف کی جماعت لیبر پارٹی نے سٹیل مل کی فروخت کو قومی المیہ قرار دیتے ہوئے ملک میں سٹیل کی صنعت کو قومیانے کا مطالبہ کیا ہے۔لیبر پارٹی کے رکنِ اسمبلی سٹیون کینوک، جن کے علاقے میں یہ سٹیل پلانٹ موجود ہے، کا کہنا ہے کہ خریدار کے معاملے پر جلد بازی سے کام نہ لیا جائے۔انھوں نے کہا کہ ’ایسا محسوس ہوتا ہے کہ ٹاٹا سٹیل بہت جلدی میں ہے۔ وہ جلد از جلد خریدار ڈھونڈنا چاہتے ہیں اور زیادہ تنقیدی بات یہ ہے کہ حکومت ٹاٹا سٹیل کے لیے بہترین خریدار ڈھونڈنے میں زیادہ وقت لے رہی ہے۔ اور ضروری یہ ہے کہ اگر مطلوبہ وقت پر خریدار نہیں ملتا ہے تو وقتی طور پر حکومت کو اسے خرید لینا چاہیے۔‘ لیبر پارٹی کے رکن نے کہا کہ ’میرے اندازے کے مطابق اگر انتظامی کنٹرول کے ساتھ پلانٹ فروخت کیا جائے تو اچھا خریدار مل سکتا ہے۔ زیادہ جلدی نہیں کرنی چاہئے۔

TOPPOPULARRECENT