Monday , December 11 2017
Home / ہندوستان / نیا آلہ دریافت : ملیریا کی تشخیص سستی اور تیز ہوگی

نیا آلہ دریافت : ملیریا کی تشخیص سستی اور تیز ہوگی

کولکاتا 19 اکٹوبر (سیاست ڈاٹ کام) مچھر کے سبب ہونے والی عام مرض ملیریا کی تشخیص اب زیادہ سستی اور محض چند سیکنڈ کا معاملہ ہوسکتی ہے کیوں کہ ایک نیا دستی آلہ تیار کرلیا گیا ہے جو کولکاتا کے دو اداروں سے وابستہ محققین کا کارنامہ ہے۔ انسٹی ٹیوٹ آف انجینئرنگ اینڈ مینجمنٹ کے ریسرچرس کی ٹیم نے انڈین انسٹی ٹیوٹ آف انجینئرنگ سائنس اینڈ ٹیکنالوجی (شیب پور) کے ساتھ اشتراک میں کام کرنے کے بعد کم لاگتی موبائیل ملیریا ڈٹیکشن سسٹم (ایم ڈی ایس) تیار کرلینے کا دعویٰ کیا ہے جو معمولی ردوبدل کے ساتھ ڈینگی کی تشخیص بھی کرسکتا ہے۔ آئی آئی ای ایس ٹی، شیب پور کے ہیڈ آف ڈپارٹمنٹ، آئی ٹی، ڈاکٹر اریندم بسواس نے کہا ہے کہ اُن کی ٹیم نے موبائیل فون کیمرے کو پیپر مائیکرو اسکوپ سے جوڑ دیا ہے جسے بعض کمیکلس کے ساتھ سلائیڈ پر خون کے نمونے کا امیج لینے کیلئے استعمال کیا جاسکتا ہے اور اس طرح حاصل شدہ ڈاٹا کو سنٹرل سرور میں پروسیسنگ کے ذریعہ ملیریا کے خلیے کی موجودگی کا پتہ چلایا جاسکتا ہے۔ پیپر مائیکرو اسکوپ جسے ‘foldscope’ بھی کہتے ہیںایسا آپٹیکل مائیکرو اسکوپ ہے جسے سادہ اجزاء بشمول کاغذ اور عدسوں کے ذریعہ تیار کیا جاسکتا ہے۔ اس سسٹم کے ذریعہ انجام دیئے جانے والے تمام ٹسٹس خود بخود ریموٹ سنٹرل سرور پر محفوظ ہوجاتے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT