Wednesday , August 15 2018
Home / ہندوستان / نیروو مودی اسکام میں وزیراعظم کا دفتر ملوث

نیروو مودی اسکام میں وزیراعظم کا دفتر ملوث

پردہ پوشی کیلئے وزراء کے استعمال کی کوشش ، کپل سبل کا الزام
نئی دہلی۔ 17فروری (سیاست ڈاٹ کام) کانگریس نے پی این بی گھپلے پر وزیر اعظم نریندر مودی کی خاموشی پر حیرت کا اظہار کرتے ہوئے آج الزام لگایا کہ مودی کے اس رویہ سے صاف ہے کہ وزیر اعظم کا دفتر گھپلے میں ملوث ہے ،اس لئے تو مختلف محکموں کے وزراء سے ثبوت مٹانے کی کوشش کروائی جارہی ہے ۔کانگریس کے سینئر لیڈر کپل سبل نے یہاں پریس کانفرنس میں کہا کہ ملک میں 21 ہزار کروڑ روپے سے زیادہ کا بینک گھپلہ ہوا ہے ۔ بینکوں سے ملک کے عوام کا اعتماد ختم ہو رہا ہے ، اس لئے اس پر مودی کو خود عوام کو اعتماد میں لینا چاہئے تھا اور اس بارے میں بیان دینا چاہئے تھا۔ وزیر اعظم کے ساتھ ہی وزارت خزانہ اور ریزرو بینک کو بھی اس بارے میں بولنا چاہیے ۔ لیکن، حیرت کی بات ہے کہ مودی حکومت میں سماجی انصاف کے وزیر اور انسانی وسائل کی ترقی کے وزیر اس پر بیان دے رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم کو معلوم تھا کہ ملک کو لوٹاجا رہا ہے ، پھر بھی گھپلے بازوں کو بینک قرض دینے کے لئے ساکھ کی حد بڑھائی گئی، قرض دینے کے قوانین میں چھوٹ دی گئی اور صرف سال 2017 میں ہی151 ’لیٹر آف انڈرسٹانڈنگ‘ دیئے گئے جن کی بنیاد پر بینکوں نے قرض دیا ہے ۔ یہ سب حکومت کو معلوم تھا، لیکن قرض لینے والے حکومت کے چہیتے تھے لہذا سارے قوانین بالائے طاق رکھے گئے اور گھپلہ کرایا گیا۔کپل نے کہا کہ ملک میں درج زیورات کمپنیوں کا اصل سرمایہ 46 ارب روپے ہے ، لیکن بینکوں نے انہیں ان کی ساکھ سے بھی زیادہ قرض دیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ پورے گھپلے کی معلومات وزیراعظم مودی کو تھی، لہذا اس بارے میں خود سامنے آنے کی بجائے کابینہ کے ساتھیوں سے لیپا پوتی کرائی جا رہی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT