Saturday , December 15 2018

نیروو مودی 20,000 کروڑ روپئے کیساتھ ملک سے فرار

اسکام پر وزیراعظم مودی سے وضاحت کا مطالبہ ، کانگریس اسٹیرنگ کمیٹی اجلاس کی صدارت کے بعد راہول کا بیان
نئی دہلی ۔ /17 فبروری (سیاست ڈاٹ کام) کانگریس کے صدر راہول گاندھی نے پنجاب نیشنل بینک اسکام میں مبینہ طور پر ملوث نیرو مودی کے مسئلہ پر وزیراعظم نریندر مودی کو آج سخت ترین تنقید کا نشانہ بنایا اور یہ بیان کرنے کا مطالبہ کیا کہ یہ (اسکام) کیونکر اور کس طرح پیش آیا اور اس ضمن میں وہ اپنی ذمہ داری قبول کرنے سے مسلسل انکار کرنے کا الزام عائد کیا اور کہا کہ وزیراعظم کے اقدامات کے سبب معیشت تباہ ہورہی ہے ۔ راہول گاندھی نے اپنی پارٹی کی اسٹیرنگ کمیٹی کے پہلے اجلاس کی صدارت کے بعد اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے مزید کہا کہ ’’وزیراعظم کو (خاموشی کے خول سے ) باہر نکلنا چاہئیے اور کہنا چاہیئے کہ (نیروو مودی کے مسئلہ پر) کیا ہوا اور کیوں ہوا ؟ اور اس ضمن میں آپ (نریندر مودی) کیا کررہے ہیں ؟ ‘‘ ۔ راہول گاندھی کانگریس کی صدارت پر فائز ہونے کے بعد اسٹیرنگ کمیٹی کے اجلاس کی پہلی مرتبہ صدارت کی ۔ یہ کمیٹی ملک کی قدیم ترین سیاسی جماعت کے اعلیٰ ترین پالیسی ساز اداررہ کانگریس ورکنگ کے بجائے کام کرے گی ۔ راہول گاندھی نے بی جے پی کے اس الزام کو مسترد کردیا کہ پنجاب نیشنل بینک اسکام کا سرغنہ نیرومودی سے ان (راہول) کے شخصی روابط تھے اور انہوں نے مودی کے ادارہ کے فروغ کی ایک تقریب میں شرکت کی تھی ۔ راہول نے کہا کہ ’’وہ ( بی جے پی قائدین) اس مسئلہ سے توجہ ہٹانے کی کوشش کررہے ہیں ‘‘ ۔ یہ سب کچھ اس وقت شروع ہوا جب وزیراعظم سے 8 نومبر 2016 ء کو 500 اور 1000 روپئے کے کرنسی نوٹس کالعدم کردیا تھا‘‘۔ اس وقت انہوں نے عوام سے ساری رقم لیکر بینکوں میں جمع کردی تھی ۔ راہول نے الزام عائد کیا کہ نیرومودی 20,000 کروڑ روپئے کی خطیر عوامی رقم لیکر ملک سے فرار ہوگیا ۔ راہول نے وزیراعظم مودی پر طنزیہ وار کرتے ہوئے کہا کہ ’’وزیراعظم نے دیڑھ گھنٹہ تک بچوں کو یہ درس دیا کہ امتحان کیسے لکھا جائے لیکن ملک کو یہ بتانے میں ناکام ہوگئے کہ اس اسکام کے لئے کون ذمہ دار ہے ‘‘ ۔

TOPPOPULARRECENT