Friday , October 19 2018
Home / Top Stories / نیرو مودی اسکام: خصوصی تحقیقاتی ٹیم کی تشکیل سے مرکز کا انکار

نیرو مودی اسکام: خصوصی تحقیقاتی ٹیم کی تشکیل سے مرکز کا انکار

۔11,400 کروڑ روپئے کی بینک دھوکہ دہی میں ملوث ارب پتی جوہری کو ملک بدر کرنے سپریم کورٹ میں درخواست کی سماعت

نئی دہلی ۔ 21 فبروری (سیاست ڈاٹ کام) مرکز نے پنجاب نیشنل بینک (پی این بی) کو 11400 کروڑ روپئے کی دھوکہ دہی میں ملوث مفرور جوہری نیرو مودی ملک بدری کے ذریعہ واپس لاتے ہوئے ان کے خلاف آزادانہ تحقیقات شروع کرنے کیلئے سپریم کورٹ میں دائر کردہ مفادعامہ کی درخواست کی مخالفت کی ہے اور کہا کہ اس ضمن میں پہلے ہی ایک ایف آئی آر درج کیا جاچکا ہے اور تحقیقات جاری ہیں۔ چیف جسٹس دیپک مصرا، جسٹس اے ایم کھانویلکر اور جسٹس ڈی وائی چندراچوڑ پر مشتمل بنچ نے کہا کہ فی الحال وہ اس مسئلہ پر کچھ کہنا نہیں چاہتی اور ایک وکیل ونیت دھانڈا کی طرف سے دائر کردہ درخواست پر مزید سماعت 16 مارچ کو مقرر کی ہے۔ اٹارنی جنرل کے کے وینو گوپال نے مرکز کی طرف سے رجوع ہوتے ہوئے کہا کہ مفادعامہ کی درخواست کی وہ مختلف بنیادوں پر مخالفت کررہے ہیں جن میں یہ بھی ایک وجہ شامل ہے کہ ایف آئی آر درج کرنے کے بعد تحقیقات شروع کردی گئی ہیں۔ مفاد عامہ کی اس درخواست نے پنجاب نیشنل بینک، ریزرو بینک آف انڈیا، وزارت فینانس و وزارت قانون کوبھی فریق بنایا ہے اور نیرو مودی اور دیگر ملزمین کو ترجیحی طور پر اندرون دو دن وطن واپس لانے ملک بدری کی کارروائی شروع کرنے کی استدعا بھی کی ہے۔ اس درخواست میں بینک دھوکہ دہی اسکام کی جس میں ارب پتی جوہری نیرومودی اور ان کے ماموں میہول چوکسی مبینہ طور پر ملوث ہیں۔ ایک خصوصی تحقیقاتی ٹیم کے ذریعہ تحقیقات کروانے کی اپیل بھی کی گئی ہے۔ اسکام میں پنجاب نیشنل بینک کے اعلیٰ انتظامیہ کے رول کی تحقیقات کروانے کی درخواست بھی کی گئی ہے۔ سی بی آئی نیرو اور میہول اور دوسروں کے خلاف پہلے ہی دو ایف آئی آر درج کرچکی ہے جس میں ان پر پنجاب نیشنل بینک کو 11,400 کروڑ روپئے کا دھوکہ دینے کا الزام عائد کیا گیا ہے۔ اس مسئلہ پر دائر کردہ دوسری درخواست پر تاحال سماعت شروع نہیں کی گئی ہے جس میں سپریم کورٹ کے ریٹائرڈ ججس پر مشتمل خصوصی تحقیقاتی ٹیم کے ذریعہ اسکام کی تحقیقات کروانے کی اپیل کی گئی ہے۔

پنجاب نیشنل بینک کے جنرل منیجر رتبہ کے افسر گرفتار
نئی دہلی ۔ 21 فبروری (سیاست ڈاٹ کام) سی بی آئی کے عہدیداروں نے کہا ہیکہ ارب پتی جوہریوں نیرو مودی اور ان کے ماموں میہول چوکسی سے متعلق 11,400 کروڑ روپئے کے بینک دھوکہ دہی اسکام کے ضمن میں اس مرکزی تحقیقاتی ادارہ نے پنجاب نیشنل بینک (پی این بی) کے صدر دفتر پر تعینات جنرل منیجر رتبہ کے ایک افسر کو گرفتار کرلیا ہے۔ پی این بی کی براڈل ہاوز ممبئی برانچ کے سربراہ راجیش جندال کل رات تحویل میں لے لیا گیا۔ وہ 2009-11ء کے دوران اس عہدہ پر فائز تھے۔ یہ الزام عائد کیا گیا ہے کہ ان کی میعاد میں شروع کردہ تحدیدات کی پابندی کے بغیر ہی نیرو مودی گروپ کو مکتوب مفاہمت جاری کئے گئے تھے۔ جندال فی الحال پی این بی ہیڈ آفس نئی دہلی میں جنرل منیجر (کریڈٹ) کے عہدہ پر فائز ہیں۔ یہ الزام بھی عائد کیا گیا ہے کہ نیرو مودی اور میہول چوکسی کی کمپنیوں کو دھوکہ دہی و جعلسازی کے ذریعہ 11,400 کروڑ روپئے کی ضمانت سے متعلق مکتوب مفاہمت جاری کئے گئے تھے۔

TOPPOPULARRECENT