Wednesday , December 19 2018

نیرو مودی کیخلاف سی بی آئی کا تازہ ایف آئی آر

نئی دہلی ۔ 7 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) سی بی آئی نے کروڑپتی جوہری نیرو مودی کے خلاف مبینہ فراڈ مقدمہ میں ایک تازہ ایف آئی آر درج کیا ہے۔ یہ کارروائی 4 مارچ کو پنجاب نیشنل بینک کی شکایت پر کی گئی جس کے بموجب نیرو مودی نے بینک کو 321 کروڑ روپئے کا نقصان پہنچایا ہے۔ نیرو مودی صدر فینانس ہسا فائراسٹار ڈائمنڈس انٹرنیشنل لمیٹیڈ کے وپل امبانی، چیف فینانس آفیسر روی گپتا اور کمپنی کے دیگر ڈائرکٹرس اور عہدیداروں سمیت اس فراڈ میں شامل تھے۔ بینک کے کئی عہدیداروں کو بھی جن کی شناخت کا انکشاف نہیں کیا گیا، گرفتار کیا جاچکا ہے۔ یہ دوسری ایف آئی آر ہے جس میں نیرو مودی کا نام واضح طور پر درج کیا گیا ہے۔ بینک نے الزام عائد کیا ہیکہ اس کی براڈی روڈ شاخ نے فائراسٹار گروپ کو 2013ء سے 2017ء کے درمیان قرض کی سہولتیں فراہم کی تھیں۔ ان سہولتوں کا انکشاف ہونے کے بعد یہ بھی پتہ چلا کہ جس مقصد سے قرض حاصل کیا گیا تھا اس کے حصول کے لئے اس قرض کو خرچ نہیں کیا گیا۔ 4 مارچ کو ریزرو بینک آف انڈیا نے اپنی رپورٹ میں بھی اس کا تذکرہ کیا ہے۔ بینک کا الزام ہیکہ داخلی تحقیقات کے دوران پتہ چلا کہ نیرو مودی اور ان کے شریک کار کمپنیوں سولار ایکسپورٹ اسکلر ڈائمنڈس اور ڈائمنڈ آر یو کے علاوہ فائر اسٹار گروپ آف کمپنیز نے بھی نیرو مودی کا بڑا حصہ تھا۔ نیرو مودی پہلے ہی سے 6200 کروڑ روپئے کی دھوکہ دہی کے سلسلہ میں ایف آئی آر کا سامنا کررہے ہیں۔ انہوں نے مبینہ طور پر ضمانت کی دستاویزات اور قرض کے مکتوبات جو ان کی کمپنی نے پنجاب نیشنل بینک کو فراہم کئے تھے، جعلی ثابت ہوئے ہیں۔ مودی اور ان کے انکل میہول چوکسی گیتانجلی گروپ کے پروموٹر بھی ہیں جس نے 2 ارب امریکی ڈالر مالیتی ایل او یوس اور ایل سیز جاری کئے تھے۔

راجستھان کے ضمنی انتخابات میں کانگریس کے مظاہرہ کی ستائش
نئی دہلی ۔ 7 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) صدر راجستھان پردیش کانگریس سچن پائلٹ نے آج راجستھان کے مجالس مقامی کے ضمنی انتخابات میں کانگریس کے مظاہرہ کی ستائش کرتے ہوئے کہا کہ ان نتائج سے عوام کے رجحان کا اور چیف منسٹر راجستھان وسندھرا راجے کی ساکھ ختم ہونے کا اندازہ ہوتا ہے۔ انہوں نے بی جے پی پر بی سخت تنقید کی جو راجستھان میں برسراقتدار ہے۔

TOPPOPULARRECENT