Wednesday , August 15 2018
Home / شہر کی خبریں / نیلوفر ہاسپٹل کو عصری بنانے کے باوجود اسٹاف کی قلت

نیلوفر ہاسپٹل کو عصری بنانے کے باوجود اسٹاف کی قلت

ڈاکٹرس کے دورہ پر ہی نرسیس کی آمد ، مریضوں کے علاج و معالجہ میں لاپرواہی
حیدرآباد۔24نومبر(سیاست نیوز) ریاست کے طبی شعبوں میںاصلاحات کے حکومت تلنگانہ سے بلند دعووں کچھ حد تک عمل کیاجارہا ہے ۔ سرکاری اسپتالوں میںنئی عمارتوں کی تعمیر کی جارہی ہے اور نیا انفراسٹرکچر بھی نصب کیاجارہا ہے بلکہ مجموعی طور پر سرکاری اسپتالوں کو عصری بنانے کی بہترین کوششیں بھی کہیں کہیں نظر آرہی ہیں ۔ ڈاکٹرس کے تقررات سے لے کر مریضوں کو زیادہ سے زیادہ سہولتیں دینے کے اقدامات بھی کیے جارہے ہیں ۔ لیکن ریاستی حکومت کے یہ اقدامات اور اعلانات کس حد تک غریب اور متوسط طبقے کے لئے فائدہ مند ہیں اس کا جائزہ لینے کی بھی ضرورت ہے۔ شہر کے مشہور سرکاری اسپتالوں میںجہاں پر لوگ علاج و معالجہ کے لیے دوردراز علاقوں سے آتے ہیںوہیںریاست کے دیگر اضلاع سے بھی مریضوں کو شہر کے سرکاری اسپتالوں کی طرف بہتر علاج کے لئے روانہ کیاجاتا ہے ۔ شہر کے سرکاری اسپتالوں میں ایک نام نیلوفر اسپتال کا ہے جو قلب شہر میں رہنے کے علاوہ گنجان آبادی کے بیچوں بیچ ہے ۔ نومولود او رکم عمر بچوں کے لئے نیلوفر اسپتال ریاست بھر میںکافی مقبول ہے اور پچھلے تین چار سالوں میں اس اسپتال کو مزیدعصری بنانے کی بہت ساری کوششیں بھی جاری ہیں۔ مگر اسپتال میںطبی عملے کی کمی نمایا ںطور اس وقت دیکھائی دیتی ہے جب معصوم بچوں کی دیکھ بھال کے لئے طبی عملہ موجود نہیںہوتا ۔ سرجری کے بعد جب معصوم بچو ں کو پوسٹ آپریٹیو وارڈ میں لاکر ڈالا جاتا ہے تووہاں پر بچوں کی نگرانی اور حسب ضرورت دواء فراہم کرنے کے لئے دوپہر دوبجے سے لیکر رات دس بجے تک کوئی موجود نہیںرہتا۔صبح کے اولین اوقات میںجب ڈاکٹرس گشت کرتے ہیں اس وقت نرسیس موجود رہتی ہیں اس کے بعد طبی عملے میںکوئی بھی وارڈ میں موجود نہیںرہتا ۔ نیلوفر اسپتال میں بیمار اور مختلف امراض کا شکار معصوم بچوں کے علاج کے لئے آنے والے لوگوں کی تعداد کافی ہے مگر بدانتظامی اور انتظامیہ کی من مانی کے سبب ان کی بات سننے والا کوئی نہیںہے۔مہینوں تک سرجری کے انتظار میں بے بس او رمجبور ماں اپنے بیمار بچے کو اسپتال میںلے کر رہنے پر مجبور ہے ۔ حکومت تلنگانہ بالخصوص سرکاری شعبہ صحت کو چاہئے کہ بنیادی سطح پر درکار اصلاحات کو روبعمل لاتے ہوئے غریب او رپسماندہ طبقا ت سے تعلق رکھنے والے لوگوں کو راحت پہنچانے کاکام کرے جو آج کے اس پرآشوب مہنگائی کے دور میںخانگی اسپتالوں میںعلاج کرانے سے قاصر ہیں۔

TOPPOPULARRECENT