Monday , September 24 2018
Home / کھیل کی خبریں / نیمار کے دو گول، افتتاحی مقابلے میں برازیل نے کروشیا کو ہرایا

نیمار کے دو گول، افتتاحی مقابلے میں برازیل نے کروشیا کو ہرایا

ساؤپاؤلو (برازیل)، 13 جون (سیاست ڈاٹ کام) برازیل نے فیفا ورلڈ کپ کی اپنی مہم بھرپور روانی کے ساتھ کھیلے گئے افتتاحی میچ میں کروشیا کے مقابل 3-1 کی فتح کے ساتھ عمدگی سے شروع کی جبکہ کرۂ ارض پر کھیل کود کے سب سے بڑے شو کا آغاز یہاں جمعرات کو ہوگیا۔ اس کھیل کا حقیقی مسکن سمجھے جانے والے برازیل نے مخالف حکومت احتجاجوں اور ناقص تیاری والے ان

ساؤپاؤلو (برازیل)، 13 جون (سیاست ڈاٹ کام) برازیل نے فیفا ورلڈ کپ کی اپنی مہم بھرپور روانی کے ساتھ کھیلے گئے افتتاحی میچ میں کروشیا کے مقابل 3-1 کی فتح کے ساتھ عمدگی سے شروع کی جبکہ کرۂ ارض پر کھیل کود کے سب سے بڑے شو کا آغاز یہاں جمعرات کو ہوگیا۔ اس کھیل کا حقیقی مسکن سمجھے جانے والے برازیل نے مخالف حکومت احتجاجوں اور ناقص تیاری والے انفراسٹرکچر کے شبہات کو بالائے طاق رکھ دیا جیسا کہ فٹبال کارنیوال پُرشکوہ افتتاحی تقریب کے ساتھ شروع ہوا۔ تاہم میزبان شروعات نے ابتداء میں غلطی کردی جب مارسیلو نے سیلف گول کرتے ہوئے ہوم کراؤڈ کو حیرت میں ڈال دیا۔ بعدازاں حیران کن کھلاڑی نیمار حقیقی ہیرو کی حیثیت سے ابھرے جیسا کہ انھوں نے موقع کی مناسبت سے بھرپور کھیل پیش کرتے ہوئے اسکور مساوی کرنے والا گول بنایا اور پھر نہایت متنازعہ پنالٹی کو گول میں تبدیل کیا جس نے زائد از 80,000 کے ہجوم میں کروشیا والوں کو ہیجانی کیفیت میں مبتلا کردیا۔ 22 سالہ اسٹار اپنا پہلا ورلڈ کپ میچ کھیلتے ہوئے کافی دباؤ میں تھے اور اُن کے غیرمعمولی ٹیلنٹ کی باریک بینی سے جانچ ہونے لگی تھی اور اسٹار بارسلونا اسٹرائیکر نے ٹھیک ویسا ہی کیا جس کی اُن سے توقع کی جارہی تھی۔

سونے پہ سہاگہ کے مصداق آسکر نے جن کے سلیکشن پر مباحث ہوئے، آخری لمحات میں خاصے فاصلے سے گیند کو سمت دکھاتے ہوئے گول پوسٹ میں پہنچا دیا جس نے جیت کی تکمیل کی۔ تاہم جاپانی ریفری یوئیچی نشیمورا کو پنالٹی عطا کرنے اُن کے مشکوک فیصلے پر ویلن قرار دیا گیا، جس پر کروشیائی ٹیم اور اُن کے پرستاروں کے دل ٹوٹ گئے۔ فریڈ نے کروشیائی ڈیفنڈر دییان لوورین کو چیلنج کیا اور گر پڑے، جس پر نشیمورا نے پنالٹی کی سزا دی۔ کروشیائی کوچ نیکو کوواچ نے بپھرتے ہوئے اپنا ردعمل ظاہر کیا، ’’اگر کسی نے دیکھا کہ وہ پنالٹی تھی، تو وہ اپنا ہاتھ اٹھائیں۔ میں تو میرا ہاتھ نہیں اٹھا سکتا۔ میں نے اسے پنالٹی نہیں جانا۔

اگر آپ اسی طرح کا رویہ برقرار رکھیں تو اس ورلڈ کپ کے دوران 100 پنالٹیز ہوجائیں گے‘‘۔ لیکن یہ بہرحال کسی ورلڈ کپ میں نہایت پُرجوش افتتاحی مقابلوں میں سے ایک رہا، جس کا 12 سربراہان مملکت نے مشاہدہ کیا، اور برازیل نے ریکارڈ چھٹی مرتبہ ورلڈ کپ جیتنے کی اپنی سعی میں شاندار شروعات کی ہے۔ اس فتح کے ساتھ ہی سارے ساؤپاؤلو میں جشن شروع ہوگیا جبکہ افتتاحی تقریب سے چند گھنٹے قبل پولیس کو ایک سب وے اسٹیشن کے قریب تازہ احتجاج کو ختم کرنے کیلئے آنسو گیس کے شل اور ربڑ کی گولیاں فائر کرنے پڑے تھے۔ وسیع تر موضوعات کا احاطہ کرنے والی افتتاحی تقریب نے برازیل کے رنگ، کلچر اور قدرتی ماحول کو خراج تحسین پیش کیا، جہاں 1950ء کے بعد سے پہلی بار بڑی فٹبال پارٹی کی میزبانی کی جارہی ہے۔ دنیا بھر سے ہزارہا فٹبال شائقین کورنتھیانس اَرینا پر جمع ہوگئے اور شاندار مقابلے کا نہایت اشتیاق کے ساتھ نظارہ کیا۔ تاہم چند اسٹانڈز ہنوز خالی دیکھے گئے جب 30 منٹ کی تقریب شروع ہوئی۔

TOPPOPULARRECENT