Friday , November 24 2017
Home / ہندوستان / نیوز چیانل کے خلاف تحدیدات پر تنقید قومی سلامتی کے ساتھ کھلواڑ کا الزام : شیوسینا

نیوز چیانل کے خلاف تحدیدات پر تنقید قومی سلامتی کے ساتھ کھلواڑ کا الزام : شیوسینا

ممبئی۔8 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) شیوسینا نے آج الزام عائد کیا ہے کہ این ڈی ٹی وی کے خلاف ایک روزہ تحدیدات پر تنقید کرنے والے قومی سلامتی کے ساتھ کھلواڑ کررہے ہیں گوکہ پارٹی نے ہندی نیوز چیانل کے خلاف احکامات پر عمل آوری کو ملتوی کردینے سے متعلق وزارت اطلاعات و نشریات کے فیصلہ کا خیرمقدم کیا۔ شیوسینا کے ترجمان ’’سامنا‘‘ کے اداریہ میں کہا گیا ہے کہ بعض فیصلے قومی سلامتی سے متعلق ہوتے ہیں جس پر سیاست نہیں کی جاسکتی۔ اگر ایسا کیا گیا تو اس کی تائید نہیں کی جاسکتی، کیونکہ خراب برتاؤ کو آزادی سے تعبیر نہیں کیا جاسکتا۔ بعض لوگ اظہار خیال کی آزادی چاہتے ہیں۔ سڑکوں پر جہاں چاہئے تھوکنے کی آزادی، جائز طریقہ سے کمانے کی آزادی اور بعض لوگ پاکستان کے موافق نعرے بلند کرنے کی آزادی کے خواہشمند ہیں، لیکن اس طرح کی آزادی قوم کو کمزور بنادیتی ہے۔ شیوسینا نے کہا کہ آج کل نیوز چیانلس یہ سمجھنے سے قاصر ہیں کہ ’’بریکنگ نیوز‘‘ کی مسابقت میں کس قدر پستی میں آگئے ہیں۔ کانگریس کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے اداریہ میں کہا گیا کہ اس کے لیڈروں کو یہ زیب نہیں دیتا کہ آزادیٔ صحافت کی بات کریں کیونکہ ایمرجنسی کے دور میں تمام اقسام کی آزادیوں کا قتل کردیا گیا تھا۔ قومی سلامتی کے نام پر سنسرشپ عائد کردی گئی۔ کئی ایک ایڈیٹروں کو جیل کی کوٹھریوں میں بند کردیا گیا اور متعدد اخبارات کی اشاعت کو بند کروادیا گیا تھا۔واضح رہے کہ ملک بھر میں برہمی اور تنقیدوں کے پیش نظر وزارت اطلاعات و نشریات نے این ڈی ٹی وی پر تحدیدات سے متعلق 2 نومبر کے احکام پر عمل آوری کو روک دینے کا اعلان کیا ہے اور اس خصوص میں نیوز چیانل کے انتظامیہ نے بھی وزیر اطلاعات سے رجوع ہوکر درخواست پیش کی تھی۔

 

نیوز چیانل کیخلاف احکامات سے مکمل دستبرداری کا مطالبہ : کانگریس
نئی دہلی۔ 8 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) کانگریس لیڈر منیش تیواری نے آج مرکزی وزیر اطلاعات و نشریات ایم وینکیا نائیڈو سے مطالبہ کیا کہ این ڈی ٹی وی کے خلاف ایک روزہ تحدیدات پر عمل آوری کو ملتوی کرنے کے بجائے مکمل دستبرداری اختیار کرلی جائے جبکہ یہ نیوز چیانل 9 نومبر کو اپنی نشریات بدستور جاری رکھے گا۔ سابق مرکزی وزیر اطلاعات و نشریات نے اپنے ٹوئٹر پر کہا کہ تحدیدات کے حکم پر عارضی التواء فریب کاری تصور کیا جائے گا لہذا مجریہ احکامات سے مکمل دستبرداری اختیار کرلینے کی ضرورت ہے۔

TOPPOPULARRECENT