Thursday , December 13 2018

نیوکلیر معاملت پر آئندہ پیر سے عمل:ایران

امریکہ اور حلیف جماعتیں کسی قدر راحت فراہم کرنے تیار :اوباما

امریکہ اور حلیف جماعتیں کسی قدر راحت فراہم کرنے تیار :اوباما
تہران ؍ واشنگٹن ۔ /12 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) ایران نے آج کہا ہے کہ متنازعہ نیوکلیر پروگرام پر عالمی طاقتوں کے ساتھ طئے پائے تاریخی معاہدے پر /20 جنوری سے عمل آوری ہوگی ۔ وزارت خارجہ کی خاتون ترجمان مرزی افخم نے مہر خبررساں ایجنسی کو بتایا کہ جوائنٹ پلان آف ایکشن پر /20 جنوری سے عمل ہوگا ۔ ایران اور یوروپی یونین نے جمعہ کو اس معاملت پر عمل آوری کے طریقہ کار سے اتفاق کیا تھا لیکن اسے تمام ممالک کی جانب سے ہنوز منظوری ملنی ہے ۔ اس دوران صدر امریکہ بارک اوباما نے آج کہا کہ ایران نے پہلی مرتبہ متنازعہ نیوکلیر پروگرام پر پیشرفت روکنے سے اتفاق کیا ہے ۔ چنانچہ امریکہ اور اس کی حلیف جماعتیں تحدیدات کے معاملے میں کسی قدر راحت دیں گی ۔ اوباما نے کہا کہ ایران کے موقف میں تبدیلی کے بعد امریکہ اور دیگر p5+1 ممالک برطانیہ ‘ فرانس ‘ جرمنی ‘ روس اور چین کے ساتھ ساتھ یوروپی یونین نے آئندہ 6 ماہ کیلئے ایران پر عائد تحدیدات میں کسی قدر نرمی کا فیصلہ کیا ہے ۔ جب تک ایران اپنے وعدہ پر قائم رہے گا تب تک ہماری کوشش یہ رہے گی کہ نیوکلیر پروگرام کا جامع حل تلاش کیا جائے ۔

TOPPOPULARRECENT