Thursday , November 23 2017
Home / دنیا / نیپال میں نئے دستور پر تشدد جاری

نیپال میں نئے دستور پر تشدد جاری

کھٹمنڈو ۔ 21 ستمبر (سیاست ڈاٹ کام) نیپال کی پولیس نے مادھیسی کارکنوں پر فائرنگ کردی جو نئے دستور کے خلاف احتجاج کررہے تھے جس کی وجہ سے 3 افراد ہندوستان سے متصل قصبہ میں زخمی ہوگئے۔ وزیراعظم نے احتجاجی گروپ کو بات چیت کے لئے احتجاجی گروپس کو مدعو کیا ہے۔ مشترکہ مادھیسی محاذ کے کارکنوں نے کئی مقامات پر احتجاجی مظاہرے کئے۔ ایک دن قبل صدر رام دھرن یادو نے نیپال کا نیا دستور جاری کیا تھا اور ملک کو انقلابی تبدیلی کے ذریعہ مکمل طور پر سیکولر جمہوریہ میں تبدیل کردیا تھا۔ کم از کم 3 افراد پولیس فائرنگ سے زخمی ہوئے جو پولیس نے براٹ نگر میں احتجاج پر قابو پانے کیلئے کیا تھا۔ کھٹمنڈو کے بعد یہ نیپال کا دوسرا بڑا شہر ہے۔ زخمی افراد مقامی ہاسپٹل میں زیرعلاج ہیں۔ سرانا ضلع میں احتجاجیوں نے نئے دستور کی نقلیں نذرآتش کیں۔ ملک گیر سطح پر معمولات زندگی ایک ماہ طویل احتجاج سے مفلوج ہیں۔ یہ احتجاج مادھیسی فرنٹ اور تروانگ اسٹرگل کمیٹی کررہے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT