Monday , September 24 2018
Home / کھیل کی خبریں / وارنر۔ڈی کاک جھگڑے کی تحقیقات کا آغاز

وارنر۔ڈی کاک جھگڑے کی تحقیقات کا آغاز

ڈربن۔5 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) کرکٹ آسٹریلیا (سی اے ) نے کہا ہے کہ ڈیوڈ وارنر اور جنوبی افریقہ کے وکٹ کیپر بیٹسمین کوئنٹن ڈی کاک کے درمیان ہوئے تنازعہ سے وہ آگاہ ہے اور اس معاملے میں تحقیقات شروع کر دی گئی ہے ۔غور طلب ہے کہ وارنر اور ڈی کاک کے درمیان ڈربن میں پہلے ٹسٹ کے چوتھے دن چائے کے وقفہ کے دوران تلخ کلامی ہوئی تھی جو سی سی ٹی وی کیمرے میں قید ہو گئی۔جنوبی افریقہ میڈیا نے ایک ویڈیو فوٹیج جاری کی ہے جس میں وارنر اور ڈی کاک چائے کے وقفہ کے دوران ایک دوسرے کے ساتھ بحث کرتے دکھائی دے رہے ہیں۔سی سی ٹی وی فوٹیج میں دونوں ٹیموں کے کھلاڑی اپنے اپنے ڈریسنگ روم کی جانب لوٹتے نظر آ رہے ہیں۔دونوں ٹیم کے کھلاڑی سیڑھیاں اوپر کی طرف چڑھ رہے تھے ، تبھی اچانک کھلاڑی رک جاتے ہیں اور پیچھے کی طرف دیکھنے لگتے ہیں۔اسی دوران وارنر نظر آتے ہیں جنہیں ان کی ٹیم کے ساتھی عثمان خواجہ ہٹانے کی کوشش کر رہے ہیں۔خواجہ وارنر کو ڈریسنگ روم لے جانے کی کوشش کر رہے ہیں لیکن وارنر اس کی پرواہ کئے بغیر ڈی کاک کے ساتھ بحث کرتے دکھائی دے رہے ہیں۔ویڈیو میں وارنر اتنا زیادہ غصے میں ہیں کہ وہ بار بار ڈی کاک کے پاس آکر ان سے کچھ کہہ رہے ہیں ۔ویڈیو میں دکھائی دے رہا ہے کہ آسٹریلیا کے وکٹ کیپر ٹم پین بھی خواجہ کے ساتھ آکر وارنر کو پرسکون کرنے کی کوشش کرتے دکھائی دے رہے ہیں۔وارنر اور ڈی کاک کی اس تکرار کے دوران جنوبی افریقہ کے کپتان فاف ڈو پلیسس بھی توال میں دکھائی پڑتے ہیں۔آخر کار آسٹریلیا کے کپتان اسٹیون اسمتھ وارنر کے پاس آتے ہیں اور انہیں ڈی کاک سے دور لے جاتے ہیں۔سی اے کے ترجمان نے کہاکہ ڈربن میں کھلاڑیوں کے درمیان ہوئے اس واقعہ کے بارے میں آئی رپورٹوں سے ہم آگاہ ہیں۔ہم اس واقعہ کے حقائق کے بارے میں جاننے کی کوشش کر رہے ہیں۔وارنر اس سے پہلے بھی کئی مرتبہ میدان پر مخالف ٹیم کے کھلاڑی سے لڑ چکے ہیں۔ وہ2013 میں انگلینڈ کے کپتان جیو روٹ سے بھی لڑ ے تھے ۔اس کے بعد انہیں چمپئنز ٹرافی اور ایشز سیریز کے دو میچوں سے معطل کر دیا گیا تھا۔ جنوبی افریقہ کے ٹیم منیجر محمد موسی جي نے اس پورے معاملے کو بدقسمتی سے تعبیر کیا ہے ۔انہوں نے ایک بیان میں کہاکہ اس طرح کے معاملات کا سامنے آنا بدقسمتی کی بات ہے جس میں کھیل کے احساس کا خیال نہیں رکھا گیا۔دن کی کھیل ختم ہونے کے بعد میچ ریفری نے اہم بات چیت کی تھی اور اب ہم آئی سی سی کے فیصلے کا انتظار کر رہے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT