واشنگٹن ریل حادثہ: ٹرین کی تیز رفتاری پر سوالیہ نشان

ڈیوپونٹ، واشنگٹن ۔ 20 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) امریکہ کے واشنگٹن میں زبردست ریلوے حادثے کی تحقیقات کر رہے افسر ان حادثے کے وقت انجن میں موجود ایک انجینئر اور ٹرینی کنڈکٹر سے پوچھ گچھ کریں گے ۔سرکاری ذرائع نے بتایا کہ نیشنل ٹرانسپورٹیشن سیکورٹی بورڈ (این ٹی ایس بی ) کے حکام نے امید ظاہر کی ہے کہ عملے کے تمام ارکان کے پوچھ گچھ کرنے کے بعد پتہ چلے گا کہ حادثہ سے پہلے موڑ آنے کے باوجود رفتار کی حد سے دوگنی رفتار سے گاڑی کیوں چل رہی تھی۔ یہ حادثہ اس وقت ہوا جب یہ ریل 80 مسافروں سمیت کل 86 لوگوں کو لے کر اولمپیا اور ٹاکوما کے درمیان نسبتا چھوٹے راستے سے ہوتے ہوئے جا رہی تھی۔این ٹی ایس بی حکام نے کہا کہ انہوں نے اگلے دو دن میں عملے کے تمام ارکان سے پوچھ گچھ کرنے کا منصوبہ تیار کیا ہے . تفتیشی ٹیم دیگر وجوہات کے ساتھ ساتھ ان اسباب کو بھی سنجیدگی سے لے رہی ہے جس کے مطابق ڈرائیونگ کر نے والا انجینئر اچانک نروس ہوگیاتھا۔سیکورٹی بورڈ کی رکن بیلا ڈن زار نے بتایا کہ رفتار کی حد سے زیادہ تیز گاڑی چلانے پر خود کار بریک سسٹم حادثے کے وقت فعال ہونے کے باوجود ٹرین میں موجود انجینئر کو ہنگامی بریک لگانے پڑے ۔یاد رہے کہ پیر کو اس حادثے میں تین افراد موت ہو گئی تھی اور سو سے زیادہ زخمی ہو گئے تھے جن میں دس کی حالت نازک ہے ۔

TOPPOPULARRECENT