Sunday , December 17 2017
Home / اضلاع کی خبریں / واقعہ کربلا، حق و باطل کے درمیان جنگ تھی

واقعہ کربلا، حق و باطل کے درمیان جنگ تھی

میدک /18 نومبر ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز ) بانی و صدر قرآن اکیڈیمی مولانا حافظ شیخ سید رضوان پاشاہ قادری نے کہا کہ کربلا کی جنگ اسلام کی بقاء کیلئے لڑی گئی تھی ۔ جس میں نبی کریم ﷺ کے خاندان ، گھرانہ اپنی جان عزیز کی قربانی دینا گنوارہ سمجھا لیکن یزید کے ہاتھوں بیت کرنے سے صاف انکار کردیا تھا ۔یہ لڑائی حق اور باطل کے درمیان تھی ۔ حضرت حسین نے کربلا میں اپنے نانا جان کے دین کو بچانے کیلئے ایثار قربانی دی اور بڑی استقامت ، صبر و تحمل کا مظاہرہ کرتے ہوئے فتح حاصل کی ۔ وہ یہاں مسجد رواہل پٹلم میں منعقدہ جلسہ یاد حسین سے بحیثیت مہمان خصوصی مخاطب کر رہے تھے ۔ حافظ و قاری محمد سعادت حسین قادری کی قرات کلام پاک سے جلسہ کا آغاز عمل میں آیا ۔ مہمان نعت خواں جناب محمد عمر احمد جنیدی قادری کے علاوہ مقامی میزبان نعت خواں محمد شاہد حسین اور مظفر علی نے نذرانہ منظورم عقیدت پیش کرتے ہوئے خوب داد و تحسین حاصل کی ۔ صدر کمیٹی میر عارف علی نے جلسہ کی نگرانی کی ۔ قبل ازیں مولانا مرزآ عبدالرحیم بیگ نے بھی مخاطب کرتے ہوئے یاد حسین سے متعلق تفصیلی خطاب کیا ۔ سلسلہ تقریر کو جاری رکھتے ہوئے مولانا سید رضوان پاشاہ قادری نے کہا کہ اسلام کیلئے ایسی کوئی شخصیات ہے جنہوں نے قربانیاں دی ہے لیکن حضرت حسین اس واقعہ کربلا کے ذریعہ کلمہ کو بچایا ہے ایک نبی کریم ﷺ ہے جو کلمہ پڑھانے آئے ہیں اور حضرت حسین نے کلمہ کو بچانے کا کام کیا ۔ ننھے معصوم علی اصغر سے لے کر پورے خاندان و کنبہ نے ایک ایک کرکے اسلام کیلئے جانیں نچھاور کردی ۔ آج عقل کے اندھے اس واقعہ کو توڑ موڑ کر قوم کو گمراہ کرنے کی کوشش کر رہے ہیں کسی نے کہا کہ یہ کرسی کی لڑائی تھی اور کوئی کہہ رہا ہے کہ سیاسی جنگ تھی ۔ کوئی مانے یا نہ مانے مگر حضرت حسین نے ہمارا مانا ہے کہ قرآن احادیث سے ثابت ہے کہ اسلام بقاء کیلئے یہ جنگ لڑی ۔ آحر میں انہوں نے مسلمانوں کو تلقین کی کہ وہ نمازوں کی پابندی کرے ۔ سلام خیر الانام کے بعد جلسہ کا اختتام عمل میں آیا ۔

TOPPOPULARRECENT