Thursday , July 19 2018
Home / کھیل کی خبریں / والدین کی خوشی کامیابی کا راز:فیڈرر

والدین کی خوشی کامیابی کا راز:فیڈرر

آسٹریلین چمپئن کی نمبرایک مقام پر جلد واپسی کا امکان

ملبورن ۔ 29 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) حریف کھلاڑیوں کے علاوہ بڑھتی عمر سے فٹنس مسائل کو بھی شکست دیتے ہوئے گذشتہ روز 20 واں گرانڈ سلام خطاب حاصل کرنے والے راجر فیڈرر آسٹریلین اوپن ٹرافی حاصل کرنے کے بعد اپنی تقریر کے دوران انہوں نے آئندہ برس کا تذکرہ نہیں کیا تھا جس کے بعد قیاس کیا جانے لگا کہ شاید فیڈرر رواں سیزن کے بعد سبکدوشی کا اعلان کریں گے لیکن دوسرے دن انہوں نے میڈیا نمائندوں سے اظہارخیال کرتے ہوئے کہا کہ وہ ٹرافی تھامنے کے بعد اپنی تقریر میں یہ جملہ کہنا بھول گئے کہ ’’آئندہ برس ملاقات ہوگی‘‘۔ کامیابی کے راز پر اظہارخیال کرتے ہوئے انہوں نے مزید کہا کہ وہ یہ نہیں جانتے کہ سبکدوشی کا اعلان کب ہوگا کیونکہ وہ اس وقت ہر ٹورنمنٹ میں شرکت نہیں کررہے ہیں جس کی وجہ سے سفر کی تھکان بھی انہیں برداشت کرنی نہیں پڑرہی ہے۔ نیز خود مقابلہ میں برقرار رکھنے کیلئے وہ پریکٹس ضرور کررہے ہیں اس کے علاوہ انہوں نے مزید کہا کہ آخر میں میں یہ کہنا چاہوں گا کہ میرے والدین فتوحات پر فخر محسوس کرتے ہیں اور ان کی خوشی ناقابل یقین ہوتی ہے جس سے مجھے ایک نئی تحریک ملتی ہے کیونکہ والدین ٹورنمنٹ میں میرے ساتھ ہوتے ہیں اور ان کی خوشی ہی میری کامیابی کا راز ہے۔ سڈنی اولمپک 2000ء میں فیڈرر کی ملاقات میرکا سے ہوئی تھی جس کے بعد ان کی شادی ہوئی اور انہیں پہلے دو جڑواں بیٹیاں اور پھر دو جڑواں بیٹے ہیں اور یہ تمام افراد خاندان اکثر فیڈرر کے مقابلہ کے دوران میدان میں ہوتے ہیں۔ ریکارڈ چھٹے آسٹریلین اوپن کی کامیابی کے وقت میدان میں ان کے والدین بھی موجود تھے جہاں وہ اپنے والدین اور اولاد کے سامنے حریف کھلاڑی کروشیا کے مارن سیلچ کو 5 سیٹوں کے سخت ترین مقابلہ میں 6-2,6-7(5-7), 6-3,3-6, 6-1 سے شکست دی۔ اس شاندار کامیابی کے باوجود آج جاری کردہ تازہ ترین درجہ بندی میں رافل نڈال بدستور پہلے اور فیڈرر دوسرے
مقام پر فائز ہے جبکہ فائنل میں رسائی حاصل کرنے والے سیلچ کریئر میں پہلی مرتبہ تیسرے مقام پر پہنچ چکے ہیں۔ فیڈرر اور نڈال کے درمیان اب درجہ بندی کا فرق 500 نشانات سے بھی کم رہ گیا ہے لہٰذا آئندہ چند ہفتوں کے دوران فیڈرر کو دوبارہ نمبر ایک مقام حاصل کرنے کا زرین موقع حاصل ہے کیونکہ نڈال زخمی ہوکر تین ہفتوں کیلئے ٹینس سے دور بھی ہیں۔

TOPPOPULARRECENT