Friday , April 20 2018
Home / Top Stories / واٹس ۔ ایپ استعمال کرنے والے +86 سے شروع ہونے والے نمبر سے چوکس رہیں

واٹس ۔ ایپ استعمال کرنے والے +86 سے شروع ہونے والے نمبر سے چوکس رہیں

فوج کا انتباہ ، نجی و حساس دستاویزات کا سرقہ کرنے چینی ہیکرس کی کوشش
حیدرآباد ۔ 20 ۔ مارچ : ( سیاست نیوز ) : واٹس ۔ ایپ اور دوسرے مسینجر ایپلی کیشن استعمال کرنے والو خبردار … !! ، چوکس رہئیے … ! اور محفوظ رہئیے کیوں کہ چینی ہیکرس آپ کی نجی تفصیلات جاننے اور حساس معلومات و مواد بالخصوص دستاویزات تک رسائی حاصل کرنے کی جان توڑ کوشش کررہے ہیں ۔ آپ کی تھوڑی سی غفلت صرف آپ کو ہی نہیں بلکہ آپ کے واٹس ۔ ایپ گروپ میں شامل دوسرے تمام ارکان کو زبردست نقصان پہنچا سکتی ہے ۔ چینی ہیکرس نے ہندوستان اور ہندوستانی شہریوں کو بطور خاص نشانہ بنا رکھا ہے اور اب ان ہیکرس نے واٹس ۔ ایپ کا سہارا لیا ہے ۔ قارئین یہ انتباہ ہم یا محکمہ پولیس کی کوئی سائبر سیکوریٹی برانچ نہیں دے رہی ہے بلکہ ہندوستانی فوج دے رہی ہے جو خود چینی ہیکرس کا نشانہ بنی ہوئی ہے ۔ حال ہی میں مائیکرو بلاگنگ سائٹ ٹویٹر پر ہندوستانی فوج نے ایک ویڈیو جاری کیا جس میں ملک کے واٹس ۔ ایپ صارفین کو چینی ہیکرس سے چوکس رہنے کا مشورہ دیا گیا ہے ۔ ویڈیو میں بتایا گیا کہ کس طرح چینی ہیکرس ہندوستانی افواج اور عوام کے ساتھ ساتھ اہم اور حساس نوعیت کے اداروں کو نشانہ بنانے کے خواہاں ہے ۔ ایڈیشنل ڈائرکٹوریٹ جنرل آف پبلک انٹر فیس (ADGPI) کے مطابق آپ کی ڈیجیٹل دنیا میں چینی ہیکرس زبردستی اور خفیہ انداز میں داخل ہونے کے خواہاں ہیں ۔ ویڈیو میں فوج نے واٹس ۔ ایپ استعمال کرنے والوں کو خبردار کرتے ہوئے کہا کہ وہ اپنے گروپ کی مسلسل تنقیح کرتے رہیں اور یہ دیکھیں کہ کہیں ن کے گروپ میں +86 سے شروع ہونے والا کوئی نمبر تو شامل نہیں ہوا ۔ فوج کے مطابق واٹس ۔ ایپ چینی ہیکرس کے لیے ہیکنگ ایک ذریعہ بن گیا ہے ۔ ایسے میں عوام اس سوشیل مسینجر ایپ کا بڑی احتیاط سے استعمال کریں ۔ چار ماہ قبل فوج نے ایل اے سی ( لائن آف ایکچویل کنٹرول ) پر تعینات فوجیوں کو واٹس ایپ کے بشمول دوسرے مسینجر ایپس استعمال نہ کرنے کا مشورہ دیا تھا ۔ اب فوج نے ہندوستانی شہریوں کو خبردار کیا ہے کہ چینی ہیکرس +86 سے شروع ہونے والے فون نمبر کے ذریعہ آپ کے واٹس ۔ ایپ گروپ میں داخل ہو کر ڈاٹا سرقہ کرنا شروع کردیتے ہیں ۔ اگر آپ سم کارڈ بھی تبدیل کررہے ہوں تو پرانا سم کارڈ مکمل طور پر تلف کردیں ۔ یہاں اس بات کا تذکرہ ضروری ہوگا کہ گذشتہ سال انٹرپرائز سیکوریٹی فرم ’ فائبر آئی ‘ کے ایک جائزہ میں بتایا گیا تھا کہ چین 2018 میں ایشیا بحرالکاہل میں اپنا اثر و رسوخ بڑھانے کا خواہاں ہے اس کے لیے چینی ہیکرس ، ہندوستان ، ہانگ کانگ ، جنوبی کوریا ، جاپان ، فلپائن ، ویٹنام اور جنوب مشرقی ایشیا کے دوسرے ممالک کو نشانہ بنائیں گے ۔ 2015 میں بھی ایک رپورٹ آئی تھی جس میں انکشاف کیا گیا تھا کہ چینی ہیکرس ہندوستان کے دفاعی اور تجارتی شعبہ کے حساس مواد ( حساس نوعیت کی دستاویزات ) کا سرقہ کرنے ہندوستانی اداروں کو مسلسل نشانہ بنا رہے ہیں ۔ 2015 تک چینی ہیکرس نے ہندوستان کے کم از کم 70 اداروں پر سائبر حملے کئے ۔ دوسری طرف چینی ہیکرس کی سرگرمیوں سے امریکی حکومت اور اس کی خفیہ تنظیمیں بھی پریشان ہیں ۔۔

TOPPOPULARRECENT